دن میں ازدواجی فرائض کی ادائیگی اور ورزش کیلئے بہترین وقت کونسا ہوتا ہے؟ سائنسدانوں کا ایسا انکشاف کہ سب خیالات غلط قرار دے دئیے

دن میں ازدواجی فرائض کی ادائیگی اور ورزش کیلئے بہترین وقت کونسا ہوتا ہے؟ ...
دن میں ازدواجی فرائض کی ادائیگی اور ورزش کیلئے بہترین وقت کونسا ہوتا ہے؟ سائنسدانوں کا ایسا انکشاف کہ سب خیالات غلط قرار دے دئیے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن (نیوز ڈیسک) انسانی جسم دن اور رات کے قدرتی چکر کے ساتھ گہری مطابقت رکھتا ہے اور دن کے مختلف حصوں میں ہماری قوت مدافعت اور ذہنی کیفیت بھی مختلف ہوتی ہے۔ سائنسدانوںنے انسان کے جسم میں پائے جانے والے قدرتی حیاتیاتی کلاک کے مطالعے کے بعد معلوم کیا ہے کہ ہمارا جسم کسی بھی کام کو دن کے کسی مخصوص حصے میں ہی بہتر طور پر سر انجام دے سکتا ہے، جبکہ کسی کام کو اس کے مخصوص وقت پر نہ کرنے سے مطلوبہ نتائج بھی دستیاب نہیں ہوسکتے۔

اخبار ڈیلی میل کے مطابق برمنگھم یونیورسٹی کے تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ ہمیں ایک صحت مند زندگی کے لئے اپنے حیاتیاتی کلاک کو مدنظر رکھتے ہوئے کچھ اہم ترین کاموں کا درست وقت ضرور معلوم ہونا چاہیے۔ ماہرین نے مختلف کاموں کے لئے بہترین وقت کی تفصیل بیان کی ہے، جن میں خصوصاً ازدواجی فرائض کی ادائیگی اور ورزش کا ذکر کیا گیا ہے۔

خوشگوار شادی شدہ زندگی کی خواہش ہو تو یہ باتیں خواتین کو کبھی بھی اپنے ہمسفر کو نہیں بتانی چاہیے

سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اولاد کے خواہشمند جوڑوں کو ازدواجی فرائض کی ادائیگی کے لئے تقریباً صبح 8 بجے کے وقت کا انتخاب کرنا چاہیے، کیونکہ اس وقت سپرمز کی تعداد اور طاقت عروج پر ہوتی ہے، جبکہ ان کی حرکت اور حساسیت کی صلاحیتیں بھی بہترین ہوتی ہیں۔

اسی طرح ورزش کے لئے سہ پہر 4 بجے کو بہترین وقت قرار دیا گیا ہے، کیونکہ اس وقت ہمارے پھیپھڑوں کی کارکردگی عروج پر ہوتی ہے۔ امریکی سائنسدانوں نے تقریباً 5ہزار افراد کے پھیپھڑوں کی کارکردگی کا 5سال تک مشاہدہ کرنے کے بعد نتیجہ اخذ کیا ہے کہ سہ پہر کے وقت ہماری سانس لینے کی صلاحیت بہت اچھی حالت میں ہوتی ہے، لہٰذا جسم کو آکسیجن کی وافر فراہمی بھی ممکن ہوتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس