ہائی کورٹ نے اورنج ٹرین منصوبے پر پاک چین معاہدہ کی تفصیلات طلب کرلیں

ہائی کورٹ نے اورنج ٹرین منصوبے پر پاک چین معاہدہ کی تفصیلات طلب کرلیں
ہائی کورٹ نے اورنج ٹرین منصوبے پر پاک چین معاہدہ کی تفصیلات طلب کرلیں

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ نے اورنج لائن منصوبے کے خلاف درخواستوں پرپاکستان اورچین کے درمیان ہونے والے معاہدے کی تفصیلات 2مئی کوطلب کرلی ہیں۔عدالت نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ بظاہرلگتاہے کہ اورنج لائن منصوبے کامعاہدہ متعلقہ کمپنی کو شفافیت کی بنیادپرنہیں دیاگیا۔جسٹس عابد عزیز شیخ کی سربراہی میں قائم دو رکنی بنچ نے ایک ہی نوعیت کی مختلف درخواستوں پر سماعت کی۔ درخواست گزار وکیل اظہر صدیق نے الزام لگایاکہ اورنج لائن منصوبے کا معاہدہ کمپنی کو میرٹ سے ہٹ کردیاگیا اور معاہدہ میں شفافیت نہیں ہے، سماعت کے دوران دو رکنی بنچ کے روبرو یہ نکتہ اٹھایاگیا کہ منصوبے کی فزیبلٹی تیارکرنےوالی کمپنی نے سفارش کی تھی کہ تاریخی عمارتوں کو بچانے کے لئے7کلومیٹرعلاقہ میں زیر زمین تعمیررکھی جائے۔ درخواست گزار کے وکیل نے نشاندہی کی کہ وزیر اعلی نے نیسپاک کو فزیبلٹی رپورٹ تبدیل کرنے کا اختیار دے دیا، ہائیکورٹ کے دو رکنی بنچ نے اٹارنی جنرل پاکستان کو ہدایت کی کہ اورنج لائن میٹرو ٹرین منصوبے کے حوالے سے حکومت پاکستان اورچین کے درمیان ہونے والے معاہدہ کی تفصیلات دو مئی کو پیش کی جائیں۔

مزید : لاہور