مقبوضہ کشمیر کے علاقے گوری پورہ میں مبینہ طورپر پولیس چوکی پر حملہ ، حملہ آوروں نے پولیس اہلکاروں کیساتھ کیا سلوک کیا؟ جان کرآپ کی بھی ہنسی نکل جائے گی کیونکہ ۔ ۔ ۔

مقبوضہ کشمیر کے علاقے گوری پورہ میں مبینہ طورپر پولیس چوکی پر حملہ ، حملہ ...
مقبوضہ کشمیر کے علاقے گوری پورہ میں مبینہ طورپر پولیس چوکی پر حملہ ، حملہ آوروں نے پولیس اہلکاروں کیساتھ کیا سلوک کیا؟ جان کرآپ کی بھی ہنسی نکل جائے گی کیونکہ ۔ ۔ ۔

  

سری نگر(ویب ڈیسک) مقبوضہ کشمیر میں حملہ آور سری نگر کے نواحی علاقے گوری پورہ میں پولیس کی ایک چوکی پر حملہ کر کے 4 پولیس اہلکاروں سے ان کی سروس رائفلیں چھین کر فرار ہوگئے۔

7 حملہ آوروں کے گروپ نے سری نگر کے علاقے گوری پورہ میں بھارتی پولیس کی 13ویں بٹالین کی چوکی پر حملہ کیا۔ پولیس کے ایک ترجمان نے سرینگر میں ایک بیان میں دعویٰ کیا ہے کہ مجاہدین کے ایک گروپ نے ہتھیار چھیننے کی کارروائی کی۔ پولیس اہلکاروں نے موقع پر پہنچ کر تلاشی اور محاصرے کی کارروائی شروع کردی ہے۔کشمیری ذرائع کاکہناتھاکہ یہ صرف نئے آپریشن کیلئے ایک بہانہ تھا، نہتے افراد کیسے مسلح اہلکاروں سے اسلحہ چھین سکتےہیں۔ 

دریں اثنا کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے کہا ہے کہ کشمیری نوجوان جموں وکشمیر کو بھارت کے غاصبانہ قصبے سے آزاد کرانے کیلیے اپنی جوانیاں قربان کررہے ہیں لہذا ہماری یہ ذمے داری ہے کہ ہم ان کے مشن کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلیے اپنی جدوجہد ہر قیمت پر جاری رکھیں۔

تحریک حریت جموں وکشمیر کے چیئرمین محمد اشرف صحرائی نے ضلع پلوامہ کے علاقے ترال میں بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں شہید 4 کشمیری نوجوانوں کو شاندار خراج عقیدت پیش کیا ہے۔ دختران ملت کی سربراہ آسیہ انداربی، پیپلز لیگ کے چیئرمین مختار احمد وازہ ،شبیر احمد ڈار، محمد اقبال میر و دیگر نے بھی اپنے الگ الگ بیانات میں شہدائے ترال کو زبردست خراج عقیدت پیش کیا۔

مزید : بین الاقوامی /انسانی حقوق