پنجاب پولیس کے 2 اہلکاروں نے اپنی ساتھی لیڈی کانسٹیبل کو ہی بدفعلی کا نشانہ بنا ڈالا، لیکن اس کے بعد کیا شرمناک کام کردیا ؟ ایسا انکشاف کہ خبرملتے ہی حکام بالا کی دوڑیں لگ گئیں، محکمے میں کھلبلی مچ گئی

پنجاب پولیس کے 2 اہلکاروں نے اپنی ساتھی لیڈی کانسٹیبل کو ہی بدفعلی کا نشانہ ...
پنجاب پولیس کے 2 اہلکاروں نے اپنی ساتھی لیڈی کانسٹیبل کو ہی بدفعلی کا نشانہ بنا ڈالا، لیکن اس کے بعد کیا شرمناک کام کردیا ؟ ایسا انکشاف کہ خبرملتے ہی حکام بالا کی دوڑیں لگ گئیں، محکمے میں کھلبلی مچ گئی

  

بہاولنگر (ڈیلی پاکستان آن لائن)  تحصیل چشتیاں میں ساتھی لیڈی کانسٹیبل سے مبینہ زیادتی اور ویڈیو بناکر بلیک میل کرنے کے الزام میں 2 پولیس اہلکاروں کو گرفتار کرلیا گیا۔

ایف آئی آر کے مطابق تھانہ مدرسہ میں تعینات لیڈی پولیس کانسٹیبل نے الزام عائد کیا کہ ہیڈ کانسٹیبل فہیم نے اپنے ساتھی اے ایس آئی کاشف کے ہمراہ ڈیڑھ ماہ قبل انہیں زیادتی کا نشانہ بنایا اور ویڈیو بنائی۔جیونیوز نے لیڈی کانسٹیبل کےحوالے سے بتایا کہ   ہیڈ کانسٹیبل فہیم انہیں پہلے بھی جنسی طور پر ہراساں کیا کرتا تھا، ایک دن ملزم لیڈی کانسٹیبل کو چک 15 گجیانی میں واقع ایک مکان میں ایک خاتون ملزمہ کی نگرانی کا بہانہ بنا کر لے گیا، جہاں اے ایس آئی کاشف بھی موجود تھا۔

خاتون کے مطابق ملزمان نے انہیں نشہ آور اویات دے کر مبینہ طور پر زیادتی کا نشانہ بنایا اور ان کی تصاویر اور ویڈیوز بناکر انہیں بلیک میل کیا۔

لیڈی کانسٹیبل کے مطابق واقعے کے بعد ہیڈ کانسٹیبل فہیم نے انہیں پیشکش کی کہ اگر وہ چاہتی ہیں کہ یہ سلسلہ رک جائے تو وہ اس سے نکاح کرلیں۔ڈی پی او بہاولنگر عطاالرحمان نے لیڈی کانسٹیبل سے زیادتی کا نوٹس لے کر واقعے میں ملوث اہلکاروں کومعطل کردیا۔

دوسری جانب خاتون کی مدعیت میں گذشتہ روز ہیڈ کانسٹیبل اور اےایس آئی کے خلاف مقدمہ درج کرکے انہیں گرفتار کرلیا گیا۔

مزید : جرم و انصاف /علاقائی /پنجاب /بہاول نگر