طلبہ تنظیمیں سیاستدانوں ، ٹیچر ز کا ہتھیار،یونیورسٹی میدان جنگ ، پڑھائی متاثر

  طلبہ تنظیمیں سیاستدانوں ، ٹیچر ز کا ہتھیار،یونیورسٹی میدان جنگ ، پڑھائی ...

  

ملتان ( سٹاف رپورٹر)سیاست دانوں اور پروفیسروں کی طرف سے اپنے مقاصد کے لئے طلبہ تنظیموں کی پشت پناہی اور انہیں استعمال کرنے کا سلسلہ تھم نہ سکا۔ یونیورسٹی کا امن اور ڈسپلن تباہ ہو کررہ گیا ۔ یونیورسٹی انتظامیہ بھی لڑائی جھگڑوں سے پریشان ہو گئی۔ تفصیلات کے مطابق طلبہ(بقیہ نمبر47صفحہ12پر )

 تنظیمیں سیاستدانوں اور پروفیسروں کے نرغے میںہیں۔ پابندی کے باوجود بہاوالدین زکریا یونیورسٹی میں طلبہ تنظیموںکا راج جاری ہے آئے روز لڑائی جھگڑوں میں متعدد افراد بھی زخمی ہو چکے ہیں۔ اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ طلبہ تنظیموں کی سیاسی پارٹیوں سمیت اعلی عہدوں پر فائز پروفیسر بھی پشت پناہی کرتے ہیں جبکہ اپنے مقاصد کے لئے بھی ان تنظیموں کو استعمال کیا جاتا ہے۔ یونیورسٹی میں لڑائی جھگڑوں کے ساتھ ساتھ اسلحہ کلچر بھی فروغ پا رہا ہے۔ دوسری جانب یونیورسٹی انتظامیہ لڑائی جھگڑوں کو روکنے میں ناکام دکھائی دیتی ہے واضح رہے کہ یونیورسٹی میں تمام تر طلبہ تنظیموں پر پابندی عائد ہے۔ اس سلسلے میں یونیورسٹی حکام کا کہنا ہے کہ پرتشدد واقعات میں ملوث طلبا کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے۔ پولیس میں مقدمات بھی درج ہیں اور ان کے خلاف ڈسپلن کی خلاف ورزی پر بھی کارروائی ہوتی ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -