بینک الفلاح کا قبل از ٹیکس 21 فیصد منافع کا اعلان

بینک الفلاح کا قبل از ٹیکس 21 فیصد منافع کا اعلان

  

کراچی (اکنامک رپورٹر ) بینک الفلاح کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے 25 اپریل 2019 کو ابو ظہبی میں منعقدہ اجلاس میں 31 مارچ 2019 کو اختتام پذیر ہونے والی سہ ماہی کے بینک کے غیرآڈٹ شدہ عبوری مالیاتی اعداد و شمار کی منظوری دے دی ہے۔ بینک کا 31 مارچ 2019کو اختتام پذیر ہونے والی سہ ماہی کا منافع قبل از ٹیکس گزشتہ سال 5.075 ارب روپے کے مقابلے میں 21 فیصدکے متاثرکن اضافے کے ساتھ 6.134 ارب روپے ہوگیا۔ بینک کا منافع بعد از ٹیکس 3.122 ارب روپے رہا جو معمولی رہا جس کی وجہ منی بجٹ کے ذریعے سال 2017 میں سپر ٹیکس عائد ہونے سے بلند شرح ٹیکس ہے۔ فی شیئر آمدن (ای پی ایس) مارچ 2018 میں 1.85 روپے کے مقابلے میں 1.76 روپے رہی۔ بینک نے بلند شرح سود کے رجحان میں اپنی پوزیشن کو مستحکم کیا ہے۔ اس سہ ماہی کے لئے مجموعی ریونیو گزشتہ سال اسی عرصے میں 10.364 ارب روپے کے مقابلے میں 30 فیصد اضافے کے ساتھ 13.450 ارب روپے رہا۔ ریونیو میں اضافے کی بنیادی وجہ پالیسی ریٹ بڑھنے کے ساتھ ساتھ بلند اوسط حجم میں ہم آہنگی کے ساتھ قرضوں میں اضافہ ہے۔ فیسوں سے حاصل آمدن بڑھ کر 11 فیصد ہوگئی جبکہ گزشتہ سال گورنمنٹ سیکورٹیز پر حاصل منافع اور سال 2019 کی پہلی سہ ماہی کے دوران اسٹاک مارکیٹ سے پڑنے والے اثرات سے ہم آہنگی کی وجہ سے کیپٹل گین میں تبدیلی آئی۔ اس کے نتیجے میں مجموعی طور پر نان فنڈ سے حاصل آمدن گزشتہ سال کے مقابلے میں کم رہی۔ انتظامی اخراجات اسی عرصہ کے مقابلے میں 16 فیصد بڑھ گئے ۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -