بلاول بھٹو زرداری اور فریال تالپور کے حلقہ انتخاب میں ’ایڈز‘ وبا کی صورت اختیار کر گئی

بلاول بھٹو زرداری اور فریال تالپور کے حلقہ انتخاب میں ’ایڈز‘ وبا کی صورت ...
بلاول بھٹو زرداری اور فریال تالپور کے حلقہ انتخاب میں ’ایڈز‘ وبا کی صورت اختیار کر گئی

  

لاڑکانہ(صباح نیوز) چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو اور فریال تالپور کے حلقہ انتخاب میں ایڈز وبا کی صورت اختیار کر گئی ہے جہاں  سندھ ایڈز کنٹرول پروگرام  کی جانب سے رتودیرو میں میں لگائے گئے سکریننگ کیمپ میں ایڈز کے تین نئے کیسز جبکہ گاؤں سیلرا میں ایک ہی خاندان کے 7 افراد میں ایڈز وائرس کی تصدیق کے ہونے کے بعد مریضوں کی کل تعداد 25 ہو گئی ہے جبکہ مرنے والوں کی تعداد بھی 7 ہے۔

سکریننگ کیمپ میں سامنے آنے والے ایڈز متاثرین میں ایک خاتون اور اسکا 7 سالہ بیٹا مجاہد اور 1 سالہ بچہ حسام شامل ہیں، جس کے بعد تعداد 18 ہوئی تاہم نواحی گاؤں اللہ ڈنو سیلرو میں ایک ہی خاندان کے 7 افراد میں دو ماہ قبل ایڈز وائرس ہونے کی تصدیق ہو چکی تھی جو کہ دو ماہ سے کراچی سے دوا لے کر علاج کروا رہے ہیں، گاؤں سیلرا میں ایڈز میں مبتلاایک خاتون شمشاد اور چار ماہ کا توفیق پہلے ہی وفات پا جانے کے بعد اس وقت پروین خاتون ان کے شوہر طارق، بیٹی ام کلثوم، 12 سالہ محسن، دو سالہ عثمان ایڈز کا شکار ہیں، جس کے بعد اب کل تعداد 25 ہو چکے ہے جبکہ مرنے والوں کی تعداد 7 ہے۔دیہاتیوں نے حکومت سندھ سے رتودیرو میں ہی علاج فراہم کرنے کے لئے مدد کی اپیل کر دی ہے۔

دوسری جانب سندھ ایڈز کنٹرول پروگرام کی جانب سے متعلقہ گاؤں سمیت دیگر تین گاوں میں پیر سے بدھ تک ٹیمیں بھیج کر سکریننگ کیمپ قائم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ صورتحال کے پیش نظر سندھ ایڈز کنٹرول پروگرام نے سکریننگ کیمپ کی مدت میں توسیع کر دی ہے پیر سے آئندہ تین روز تک مختلف ٹیمیں رتودیرو سے ملحقہ 4 گاؤں جہاں سب سے زیادہ کیسسز رپورٹ  ہوئے ہیں وہاں سکریننگ  کریں گی جبکہ ڈسٹرکٹ ہیلتھ افسر لاڑکانہ نے ضلع میں 270 عطائی ڈاکٹرز کی کلینکس موجود ہونے کا سرکاری سطح پر اعتراف بھی کیا ہے تاہم  یہاں سندھ ایڈز کنٹرول پروگرام کی جانب سے جن مریضوں میں ایڈز پازیٹیو آیا ہے انہیں پندرہ روز بعد لاڑکانہ ایچ آئی وی سینٹر آنے کی ہدایت کی گئی ہیں جسے مریضوں نے ظلم قرار دیا ہے کہ انہیں لاڑکانہ اور کراچی بلایا جاتا ہے، غریب مریضوں کے فوری علاج کی کوئی عملی کاوش دکھائی نہیں دیتی ۔

ڈپٹی کمشنر لاڑکانہ کا کہنا تھا  کہ عطائی ڈاکٹرز کے خلاف کریک ڈاؤں آج سے شروع کیا جائے ۔انہوں نے ایڈز سے متاثرہ بچوں کی تعداد بتانے سے بھی گریز کیا تاہم ڈپٹی کمشنر نے رتودیرو میں ایڈز متاثرہ بچوں کو علاج کے لئے ٹریٹمنٹ سینٹر  کھولنے اور متاثرہ مریضوں کا مکمل علاج سندھ حکومت کے خرچ پر کروانے کا اعلان کیا۔

مزید :

علاقائی -سندھ -لاڑکانہ -