گیس غائب‘ روزہ داروں کی مشکلات میں اضافہ‘ ہوٹلوں پر رش

گیس غائب‘ روزہ داروں کی مشکلات میں اضافہ‘ ہوٹلوں پر رش

  

میلسی‘ صادق آباد‘ ڈیرہ‘جتوئی‘ ہارون آباد (سپیشل رپورٹر‘ تحصیل رپورٹر‘ س ٹی رپورٹر‘ نامہ نگار) بجلی کی غیر علانیہ لوڈ شیڈنگ سے روزہ داروں کو شدید مشکلات کا سامنا پانی کا بحران پیدا ہو گیا گھروں میپکو کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے ہیں بجلی کی بندش سے کاروبار زندگی بھی متاثر ہوا شہری میپکو کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے شہریوں نے رمضان المبارک میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ نہ کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ روزے اافطاری اور سحری کے اوقات میں گیس کی لوڈشیڈیگ معمول بن گئی محکمہ سوئی نادرن حکام نے گیس شیڈول کے باوجود دھجیاں اڑا دیں صادق آباد کے متعدد علاقے اور احمدپورلمہ شہر میں سحری اور افطاری کے قریب ہی جاکر ہی سوئی گیس کی فراہمی کچھ ہوتی ہے جو روزے داروں اور شہریوں کیلئے انتہائی ناکافی ہے جس سے روزے دار مایوس اور شہریوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے جس پر شہریوں محمدساجد،محمدنوید،سلمان محمود،محمدعارف،محمدمحسن،محمدعمر و دیگر نے ارباب اقتدار اور سوئی نادرن حکام بالا سے گھریلو سوئی گیس کی فراہمی کو یقینی بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔ ڈیرہ غازیخان میں محکمہ سوئی گیس کی بے حسی مسلسل جاری ہے ماہ صیام میں سوئی گیس کی غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ میں کئی گھنٹوں کا اضافہ کردیا گیا ہے۔ سحری اور افطاری کے اوقات میں بھی سوئی گیس نہ ہونے کے سبب روزداروں کو سخت پریشانی کا سامنا درپیش ہے جبکہ محکمہ سوئی گیس نے گیس فراہمی کا جو شیڈول جاری کیا ہے وہ بھی فرضی نکلا۔ ان اوقات میں بھی گیس نہیں ہوتی ہے۔صارفین عثمان، ٹیپو، عمر، مبشر، احتشام وغیرہ کا کہنا ہے کہ ماہ صیام سے قبل جو لوڈشیڈنگ کی جارہی تھی اس میں کمی کی بجائے اضافہ کر دیا گیا ہے جن اوقات میں گیس سپلائی مہیا کی جاتی ہے اس قدر پریشر کم ہوتا ہے کہ کھانا پکانا محال ہو جاتا ہے۔ تحصیل جتوئی بھر میں گیس کے پریشر میں کمی کے باعث ہوٹلوں پر رش شہریوں کا کہنا تھا کہ گیس پریشر کمی کے باعث خواتین نے روٹیاں پکوانے کے لئے ہوٹلوں پر بھیج دیا ہے۔ ہارون آباد شہر میں رمضان المبارک کے دوران سوئی گیس کی بندش اور کم پریشر کے باعث شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ شہر کے مختلف علاقوں ٹبہ نورپورہ، بلدیہ کالونی، ہاؤسنگ کالونی، دھوبی گھاٹ و دیگر علاقوں میں افطار اور سحری کے اوقات کے دوران سوئی گیس کا کم پریشر معمول بن چکا ہے۔ جس کے باعث شہریوں کو افطاری اور سحری کے لئے تیاری میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ شہریوں حذیفہ، ابراہیم، عمر خلیل، ذیشان، فرحان و دیگر کا کہنا ہے یکم رمضان سے عجب تماشہ شروع ہوگیا ہے کہ شہر کے مختلف علاقوں میں سحروافطاری کے وقت سوئی گیس کا پریشر انتہائی کم ہوجاتاھے، جس کے باعث شہریوں کو شدید پریشانی کاسامناھے، لوگ لکڑیاں سلنڈر لاکرسحری وافطاری بنانے پرمجبورہیں اورجمعہ والے دن تو صبح سے مغرب تک پریشرنہیں ھوتا،شہریوں نے گرمیوں کے موسم میں بھی گیس بندش اور پریشر مکمل نہ ہونے پر احتجاج کرتے ہوئے اعلیٰ حکام سے صورت حال کا نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -