حکومت زرعی شعبے میں بہتری کیلئے اقدامات کررہی ہے‘ سید فخر امام

حکومت زرعی شعبے میں بہتری کیلئے اقدامات کررہی ہے‘ سید فخر امام

  

کبیروالا(تحصیل رپورٹر) وفاقی وزیر برائے وزارت قومی غذائی تحفظ اور تحقیق سید فخر امام نے اسلام آبادسے سید گروپ کے رہنماؤں جاوید احمدخان پڑھیار اور حاجی محمد ارشد سنگا سے ٹیلی فون پر گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت ملکی زراعت کے شعبے میں بہتری لانے کیلئے کوشاں ہے، وزارت نیشنل فوڈ سیکورٹی گندم کی فصل کی فراہمی، ذخیرہ اور تقسیم کے لیے سپلائی چین پر غور کرتے ہوئے پلان پر کام کر رہی ہے،ملک بھر میں گندم کی خریداری کا عمل جاری ہے اور ہمیں بارش اور موسمی تبدیلیوں کی وجہ سے خریداری کا مطلوبہ ہدف کے حصول میں مشکل کا سامنا ہے، ہمیں گندم کی فصل کیلئے مزیدمناسب گودام بنانے کی بھی ضرورت ہے کیونکہ فی الحال انکی تعداد محدود ہے،گندم، چاول، مکئی، گنا اور کپاس پاکستان کی اہم زرعی فصلیں ہیں، کپاس کی ملکی پیداوار 80 کی دہائی میں اچھی تھی لیکن گذشتہ سالوں میں پیداوار میں کمی آئی۔ تاہم پاکستان کی برآمد میں کاٹن کا حصہ 60 فیصد ہے۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کی توجہ کاٹن کی پیداوار والے دیگر ممالک کے ساتھ معلومات اور تحقیق کے تبادلے کے ذریعہ کپاس کی فصل کے بیج کے معیار اور پیداوار کو بہتر بنانے پر ہے، ہمارے ہاں دنیا کا بہترین باسمتی چاول کاشت کیا جاتا ہے لیکن بین الاقوامی مارکیٹنگ میں فائدہ نہیں اٹھایا جا سکا۔وفاقی وزیر نے دیگر زراعت کی مصنوعات کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کیڑے مار ادویات کے مضر اثرات کو کم کرنے کے لئے نامیاتی (اورگینک) کاشتکاری کی طرف بڑھاناچاہتی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم سبزیوں کے بیج درآمد کرتے ہیں، جس سے پیداواری لاگت میں اضافہ ہوتا ہے۔وفاقی وزیرسید فخرامام نے کہا کہ پاکستان کے پاس کافی افرادی قوت موجود ہے لیکن اس کو صلاحیت کے مطابق استعمال نہیں کیاگیا۔ ہمیں کاشتکاری کے بڑے رقبے کی پیداواری صلاحیت کو بڑھانے کے لئے کسانوں کی تربیت اور ٹریکٹر سمیت نئی مشینری کی ضرورت ہے۔

فخر امام

مزید :

ملتان صفحہ آخر -