مردان‘ صحافی برادری اور پولیس کے مابین راضی نامہ‘ بائیکاٹ ختم

مردان‘ صحافی برادری اور پولیس کے مابین راضی نامہ‘ بائیکاٹ ختم

  

مردان(بیورورپورٹ) مصالحتی جرگہ کی کوششوں سے صحافیوں اورپولیس کے درمیان راضی نامہ ہوگیا،واقعے کے قصور وار ایس ایچ او کو لائن حاضر کردیاگیا،صحافیوں نے پولیس کی بائیکاٹ ختم کردی چند دن قبل تھانہ پارہوتی پولیس کی طرف سے مردان پریس کلب کے صدر لطف اللہ لطف کے ساتھ مبینہ تشدد اور گرفتاری کے واقعے کے بعد مصالحتی جرگہ نے دونوں اداروں کے درمیان تنازعے کے حل کے لئے کوششیں شروع کردی تھیں جرگہ جو رکن قومی اسمبلی مجاہد خان،چیئرمین پبلک سیفٹی کمیشن کے چیئرمین حاجی عبدالعزیز خان، مرکزی تنظیم تاجران کے صوبائی جنرل سیکرٹری ظاہر شاہ،مردان چیمبر آف کامرس کے صدر کلیم اللہ امجد،سینئر نائب صدر حاجی اویس خان،چیئرمین غلام سرور صراف اور شاہد خان پر مشتمل تھا نے دونوں فریقوں کے درمیان پیدا ہونے والی کشیدگی کا خاتمہ کردیا جس کے بعد فریقین نے تلخیاں ختم کرنے اور حسب سابق ورکنگ ریلیشن قائم رکھنے کا اعادہ کیا گذشتہ روز ایگزیکٹو کلب شیخ ملتون میں راضی نامے کی تقریب منعقد ہوئی جس میں جرگہ مشران کے علاوہ ڈی پی او سجادخان،پریس کلب کے صدر لطف اللہ لطف،نائب صدر محمد یعقو ب جہانزیب،جنرل سیکرٹری ایم بشیرعادل،جائنٹ سیکرٹری شاہ حسین تنہا اور فنانس سیکرٹری پرویزشاہین کے علاوہ سینئر صحافیوں، تخت بھائی، شیرگڑھ،رستم،بخشالی اورملاکنڈ کے صحافیوں کی بڑی تعداد شریک ہوئی ڈی پی او نے کہاکہ پولیس اور پریس کا چولی دامن کا ساتھ ہے صحافی ہمارے آنکھیں او رکان ہیں دونوں ادارے امن کے قیام کے لئے کوشاں ہے حالیہ واقعے کی طرف اشارہ کرتے ہوئے ڈی پی او نے کہاکہ واقعے پر انہیں افسوس ہے پریس کلب کے صدر لطف اللہ لطف نے جرگہ مشران کی کوششوں کو سراہتے ہوئے کہاکہ کسی بھی واقعے سے قبل پولیس کو تحقیق کرنی چاہئے تاکہ بعدمیں غلط فہمیاں پیدا نہ ہو اس موقع پر پریس کلب کے عہدیداروں نے پولیس کی بائیکاٹ کے خاتمہ کا اعلان کیا دریں اثناء ڈی پی او نے تھانہ پارہوتی کے ایس ایچ او لطیف خان کو معطل کرتے ہوئے اسے فوری طورپر لائن حاضر کردیا جبکہ تھانہ سٹی اور صدر کے ایس ایچ اوز کے خلاف بھی کاروائی کی سفارش کی گئی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -