آج کی پی ٹی آئی ماضی کی تحریک انصاف میں بڑا فرق ہے:اختیار ولی

آج کی پی ٹی آئی ماضی کی تحریک انصاف میں بڑا فرق ہے:اختیار ولی

  

پشاور(سٹی رپورٹر)پاکستان مسلم لیگ نون خیبرپختونخوا کے صوبائی ترجمان اختیار ولی خان نے تحریک انصاف کے 24 ویں سالگرہ کے موقع پر عمران خان کے جاری ہونے والے بیان پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ چوبیس سال پہلے جس تحریک انصاف کی بنیاد رکھی گئی تھی عمران خان اس تحریک انصاف کو بہت عرصہ پہلے کہیں اور بھی چکے ہیں آج کی تحریک انصاف اور ماضی کی تحریک انصاف میں زمین اور آسمان کا فرق ہے۔ تحریک انصاف اپنے پروگرام سے ہٹ کر کسی غلط سمت میں چل پڑی ہے یا تحریک انصاف کو اپنے مذموم مقاصد کے لیے کسی نے کسی اور سمت میں روانہ کر دیا ہے ا پنے ایک اخباری بیان میں صوبائی ترجمان اختیار ولی خان نے کہا کہ اکبر ایس بابر جسٹس وجیہ الدین ظہور کاکاخیل جیسے کئی اور لوگ تحریک انصاف اور عمران خان کے ایجنڈے کو مسترد کرکے پارٹی چھوڑ کر چلے گئے تھے، جس جماعت نے ملک میں دوہرا نظام تعلیم تبدیل کرنے کا نعرہ لگایا تھا وہ ملک میں دوہرا معیار انصاف اور قانون رائج کر کے بیٹھ گئی ہے جس میں عمران خان کے اردگرد بیٹھے ہوئے لوگوں کے لئے انصاف اور قانون کا کوئی پیمانہ نہیں ہے جبکہ تحریک انصاف سے باہر اس کے سیاسی مخالفین کے لئے پیمانے کچھ اور ہیں انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف نے قائد اعظم کے وژن کا نعرہ لگا کر ملک میں تفرقات کو جنم دیا اور تمام وعدے جھوٹ ثابت ہوئے جبکہ عمران خان اور تحریک انصاف نے پاکستان کے وقار کو دنیا کے ہر فورم پر نقصان پہنچانے میں کبھی کوئی کسر نہیں چھوڑی انہوں نے مزید کہا کہ تحریک انصاف کو ''سیاسی قوت'' بننے میں لمبی مسافت طے کرنا باقی ہے ہنوز دلی دور است وسائل کی منصفانہ تقسیم کے جھوٹے دعوے اور نعرے لگانے والے عمران خان میں ہمت ہے تو سب سے پہلے بنی گالا کے محل کو بیچ کر علیمہ باجی سے چوری کا مال باہر نکال کر اس قوم کے غریبوں میں تقسیم کیا جائے پھر اس کے بعد کسی انقلاب کی بات کی جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -