کم جونگ ان زندہ ہیں یا نہیں؟  شمالی کوریا سے بڑی خبرآگئی 

کم جونگ ان زندہ ہیں یا نہیں؟  شمالی کوریا سے بڑی خبرآگئی 
کم جونگ ان زندہ ہیں یا نہیں؟  شمالی کوریا سے بڑی خبرآگئی 

  

سیول(ڈیلی پاکستان آن لائن)شمالی کوریا کے سربراہ کم جونگ ان کے انتقال کے حوالے سے سامنے آنے والی اطلاعات نے عالمی میڈیا میں بھونچال پیدا کررکھاہے، اگرچہ اس کی جنوبی کوریا نے بھی تردید کردی ہے لیکن اب اطلاع آئی ہے کہ کم جونگ ان نے آپریشن کے بعد  بولنا بھی شروع کردیا اور سیاحت کیلئے ایک نیا ضلع بنانے والے ورکرز کا شکریہ اداکیا۔

ڈیلی سٹار نے شمالی کوریا کے اخبار روڈونگ سنمم کے  حوالے سے بتایا کہ  سپریم لیڈ ر نے جس سیاحت کی سائٹ بننے پر شکریہ ادا کیا ، وہ وونسم گلما کے علاقے میں بنائی گئی ، اپنے تبصرے میں کم جونگ ان نے مزدوروں کو سراہا تاہم اس خبر میں شمالی کورین سربراہ کی موجودگی کاجگہ کا ذکر یا اس کی تصویر شامل نہیں کی گئی ۔ اس سے قبل آخری مرتبہ کم جونگ ان کو 11 اپریل کو اس وقت دیکھا گیا تھا جب وہ پولیٹیکل بیورو آف دی سنٹرل کمیٹی آف ورکر کی میٹنگ میں شریک ہوئے تھے ۔ 

اس سے قبل  جنوبی کوریا کی حکومت نے اس بارے میں باضابطہ بیان جاری کرتے ہوئے شمالی کوریا کے سربراہ کے انتقال کی تردید کردی تھی اور کہا  کہ کم جونگ ان نہ صرف زندہ ہیں بلکہ وہ صحتیاب ہورہے ہیں۔جنوبی کوریا کے صدر کے مشیر نے مختصر مگر واضح انداز میں شمالی کوریا کے سربراہ کی صحت سے متعلق پھیلنے والی افواہوں کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ کم جونگ اُن صحت مند ہیں۔ 

یاد رہے کہ چوبیس اورپچیس اپریل کو کم جونگ ان کی موت کی اطلاعات اس وقت تیزی کے ساتھ سامنے آئیں جب ایک امریکی صحافی نے اپنی ٹوئٹ میں دعویٰ کیا کہ چینی ریاست ہانگ کانگ کے ایک ٹی وی چینل نے دعویٰ کیا ہے کہ شمالی کوریا کے سربراہ چل بسے، اس تردید سے قبل امریکی تھنک ٹینک نے نیا دعویٰ کیا ہے کہ اس نے کم  جونگ ان کے زیراستعمال ٹرین کی سیٹلائٹ تصاویر حاصل کرلی ہیں جو علاقے ونسان میں لیڈرشپ پلیٹ سٹیشن  پر کھڑی دیکھی گئی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -