" انفارمیشن کے شعبہ میں فوجی یا نیم فوجی تعیناتی مارشل لا یا مارشل لا نما نظام کے ساتھ ۔۔۔ " عاصم سلیم باجوہ کی تعیناتی پر صحافی طلعت حسین کا حیران کن دعویٰ

 " انفارمیشن کے شعبہ میں فوجی یا نیم فوجی تعیناتی مارشل لا یا مارشل لا نما ...
 

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) صحافی و اینکر پرسن طلعت حسین  نے دعویٰ کیا ہے کہ انفارمیشن کے شعبہ میں فوجی یا نیم فوجی تعیناتی مارشل لا یا مارشل لا نما نظام کے ساتھ نتھی ہوتا ہے۔

چیئرمین سی پیک اتھارٹی لیفٹیننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ کی بطور معاون خصوصی اطلاعات تعیناتی پر تبصرہ کرتے ہوئے طلعت حسین نے کہا کہ " تاریخی طور پر انفارمیشن کے شعبہ میں فوجی یا نیم فوجی تعیناتی مارشل لا یا مارشل لا نما نظام کے ساتھ نتھی رہی ہے۔ مگر آج ایک نئی مثال قائم  کی گئی ہے۔"

ایک اور ٹویٹ میں طلعت حسین کا کہنا تھا کہ " فردوس عاشق اعوان کے تعویز بے اثر۔ شبلی فراز نئے انفارمیشن منسٹر  اور وزیر اعظم کے امیج کو جنرل راحیل شریف جیسا بنانے کے لیے فوج کے میڈیا گرو جنرل (ر) عاصم باجوہ خصوصی معاون

   -تکلف برطرف ہوگا خطاب آہستہ آہستہ

اُٹھے گا ان کے چہرے سے نقاب آہستہ آہستہ"

خیال رہے کہ وزیر اعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کو ان کے عہدے سے ہٹا کر ان کی جگہ سینیٹر شبلی فراز کو وزیر اطلاعات جبکہ سابق ڈی جی آئی ایس پی آر لیفٹیننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ کو معاون خصوصی برائے اطلاعات تعینات کردیا گیا ہے۔

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -