آزادانہ اور شفاف انتخابات ملک کو بحرانوں سے نکالنے کا واحد راستہ ہیں: سراج الحق 

آزادانہ اور شفاف انتخابات ملک کو بحرانوں سے نکالنے کا واحد راستہ ہیں: سراج ...

  

پشاور(این این آئی)امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ اسٹیبلشمنٹ مختلف سیاسی جماعتوں اور شخصیات کی پشت پناہی کر کے انہیں اقتدار میں لاتی رہی ہے۔ آزادانہ اور شفاف انتخابات ملک کو بحرانوں سے نکالنے کا واحد راستہ ہیں۔ پی ٹی آئی نے پونے چار سالوں میں انتخابی ریفارمز متعارف نہیں کرائیں۔ نئی حکومت نے بھی سابقہ حکومت کی ڈگر پر چلنا شروع کر دیا۔ نیب اور مختلف الزامات میں مطلوب شخصیات پہلے بھی حکومت کا حصہ تھیں اب بھی کابینہ میں موجود ہیں۔ نیب کو ختم کرنے کی ضرورت نہیں، ادارے کو سیاسی انتقام کے لیے استعمال نہیں کرنا چاہیے۔ احتساب کے اداروں کو مزید مضبوط اور موثر بنانے کی ضرورت ہے۔ الیکشن کمیشن کو مضبوط اور خودمختار بنایا جائے۔ انتخابات متناسب نمائندگی کے اصولوں پر ہونے چاہییں۔ سیاسی جماعتیں انتخابی ریفارمز کے لیے آپس میں مذاکرات کریں۔ وزیراعظم منصوبوں پر فوکس کرنے کی بجائے الیکشن کے جلد انعقاد کو یقینی بنائیں۔ ملک شدید پولرائزیشن کی جانب بڑھ رہا ہے۔ سیاسی جماعتوں کو سنجیدگی کا راستہ اپنانا چاہیے۔ سیاست میں گالم گلوچ اور تشدد کے کلچر کو ختم کرنا ہو گا۔ جماعت اسلامی نے مفادات کی لڑائی سے دور رہتے ہوئے عوام کی خدمت جاری رکھنے اور ملک کو اسلامی فلاحی مملکت بنانے کا عزم کیا ہواہے۔ پی ٹی آئی کوئی تبدیلی نہیں لا سکی، تینوں جماعتیں بری طرح ایکسپوز ہو گئیں۔ قوم جماعت اسلامی پر اعتماد کرے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے مرکز الاسلامی پشاور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر جنرل سیکرٹری جماعت اسلامی کے پی عبدالواسع بھی موجود تھے۔سراج الحق نے کہا کہ ملک کے 23ویں وزیراعظم نے آتے ہی آئی ایم ایف کے 22ویں پروگرام کو جاری رکھنے کے لیے تگ و دو اور منت سماجت شروع کر دی اور اس کے لیے وزیرخزانہ امریکا روانہ کر دیا۔جماعت اسلامی کا موقف ہے کہ معیشت کی بہتری، سرمایہ دارانہ سودی نظام سے چھٹکارا حاصل کیے بغیر ممکن نہیں، اسلامی معیشت کا ماڈل اپنانا ہوگا۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -