دعا زہرہ عدالت پیش،والد،کزن کیخلاف اتعغاثہ دائر،شوہر کیساتھ جانیکی اجازت

دعا زہرہ عدالت پیش،والد،کزن کیخلاف اتعغاثہ دائر،شوہر کیساتھ جانیکی اجازت

  

         لاہور(نامہ نگار)ضلع کچہری کے جوڈیشل مجسٹریٹ کی عدالت میں دعا زہرہ نے والد اور کزن کے خلاف استغاثہ دائر کر دیاگیا،عدالت نے پسند کی شادی کرنے والی دعا زہرہ کو والد کے خلاف شواہد پیش کرنے کیلئے مزید سماعت18 مئی تک ملتوی کردی جبکہ دوسری جانب سیشن عدالت نے ایس ایچ او وحدت کالونی کو دعا زہرہ کو غیر قانونی ہراساں کرنے سے بھی روک دیاہے،استغاثہ کی درخواست میں دعا نے پسند کی شادی کے بعد والد پر لاہور میں واقع گھر میں گھسنے کا الزام عائد کیاہے،دعا زہرہ نے والد اور کزن پر اغوا کی کوشش کا بھی الزام لگا تے ہوئے کہا ہے کہ والد میرے کزن زین العابدین سے زبردستی شادی کروانا چاہتا ہے، اپنے خاوند کیساتھ ہنسی خوشی رہ رہی تھی، 18اپریل کو والد مہدی کاظمی اور کزن زین العابدین اچانک گھر میں گھس آئے، والد اور کزن نے مجھے اور میرے خاوند کے ساتھ گالم گلوچ کی اور  دھمکیاں دیں، والد اور کزن نے مجھے میرے گھر سے اغوا کرنے کی کوشش بھی کی، اہل محلہ کے جمع ہونے پر دونوں کی کوشش کامیاب نہ ہوسکی، اپنی  پسند سے شادی کی ہے خاوند کے ساتھ رہنا چاہتی ہوں، عدالت سے استدعاہے کہ باپ اور کزن کیخلاف فوجداری کارروائی کی جائے، دوسری درخواست میں سیشن عدالت نے دعازہرہ کو ہراساں کرنے سے روک دیاہے۔دوسری جانب ماڈل ٹاؤن کچہری کے جوڈیشل مجسٹریٹ نے دعا زہرا کیس میں پولیس کی لڑکی کو دارالامان بھجوانے کی استدعا مستردکرتے ہوئے اسے اپنے شوہر کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی،گزشتہ روز دعا زہرا نے عدالت میں بیان ریکارڈ کروا یا اور کہا کہ وہ کراچی سے لاہور اپنی آزاد مرضی سے آئی،کسی نے اسے اغواء نہیں کیا، 18 برس کی عاقل و بالغ ہوں، اپنی مرضی سے نکاح کیا، خاوند کیساتھ خوش ہوں۔ اپنے خاوند کے ساتھ خود کو محفوظ تصور کرتی ہوں، پولیس کی جانب سے بچی کو دارالامان بھجوانے کی استدعا کی گئی تاہم عدالت نے یہ استدعا مستردکرتے ہوئے دعا کو اپنے شوہر کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی۔

دعا زہرہ 

 لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) کراچی سے لاپتہ ہونے والی دعا زہرہ کے شوہر ظہیر احمد نے کہاہے میرا پب جی گیم کے ذریعے دعا زہرہ سے رابطہ ہوا۔دعا زہرہ اور اس کے شوہر ظہیر احمد کے نئے ویڈیو کلپ سامنے آگئے۔ویڈیو کلپ میں ظہیر احمد کا کہنا ہے کہ میں لاہور کا رہائشی ہوں، پچھلے 3 سال سے ہمارا رابطہ تھا، دعا زہرہ کراچی سے خود آئی ہے۔انہوں نے کہا کہ دعا نے میرے گھر کے باہر آ کر مجھے میسج کیا،وہ رینٹ کی گاڑی پر آئی تھی، میرے گھر والے ہماری شادی کیلئے آمادہ تھے۔دعا زہرہ کے شوہر ظہیر احمد کا کہنا ہے کہ میرے گھر والے بھی چاہتے تھے کہ دعا کے گھر والے بھی رضامند ہوں۔ انہوں نے کہا کہ دعا کے گھر والوں نے شادی کے لیے مثبت جواب نہیں دیا، اسی وجہ سے یہ خود اپنا گھر چھوڑ کر آ گئی۔ویڈیو میں ظہیر احمد نے بتایا ہے کہ میں پڑھتا ہوں، ایف ایس سی کیا ہے، یونیورسٹی میں داخلے کے لیے ایپلائی بھی کیا ہے۔

ظہیر احمد 

مزید :

صفحہ اول -