فروغ نسیم کے الزامات،جسٹس قاضی فائز عیسیٰ وکلاء انرولمنٹ کمیٹی کی سربراہی سے دستبردار

فروغ نسیم کے الزامات،جسٹس قاضی فائز عیسیٰ وکلاء انرولمنٹ کمیٹی کی سربراہی ...

  

اسلام آ باد (نیوزایجنسیاں)  سپریم کورٹ کے جج جسٹس قاضی فائز عیسیٰ وکلا انرولمنٹ کمیٹی کی سربراہی سے دستبردار ہو گئے ہیں۔ اس حوالے سے انہوں نے پاکستان بار کونسل کوخط لکھ کر آگاہ کر دیا ہے۔ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی جانب سے ان کے سیکرٹری نے خط پاکستان بار کو ارسال کیا ہے۔ خط میں کہا گیا کہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ  نے وکلا انرولمنٹ کمیٹی میں دن رات کام کیا لیکن فروغ نسیم نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ پر بے بنیاد اور من گھڑت الزامات لگائے۔ پاکستان بار کونسل کو لکھے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ فروغ نسیم نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ  پر بطور چیئرمین وکلا انرولمنٹ کمیٹی جانبداری کا الزام لگایا، فروغ نسیم نے الزام عائد کیا کہ 8اپریل کو لائسنس بحالی کی درخواست دی تاہم بدنیتی کے باعث منظور نہیں کی گئی۔ خط میں کہا گیا ہے کہ فروغ نسیم کی لائسنس بحالی کی درخواست جسٹس قاضی فائز عیسیٰ  کے سامنے رکھی ہی نہیں گئی،انرولمنٹ کمیٹی کے کسی ممبر نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ سے کوئی سفارش نہیں کی۔ الزام لگایا گیا کہ انرولمنٹ کمیٹی ممبران نے درخواست منظور کرنے کی سفارش کی مگر جسٹس قاضی فائز عیسیٰ ٹس سے مس نہ ہوئے۔ خط میں مزید کہا گیا ہے کہ فروغ نسیم ایک شکست خوردہ شخص ہیں، وہ جسٹس قاضی فائز عیسیٰ ریفرنس کیس میں شکست تسلیم کرنے سے انکاری ہیں۔

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ 

مزید :

صفحہ اول -