ریال کی قیمت میں اضافے سے سرکاری حج پیکیج 8لاکھ روپے سے بڑھ گیا 

ریال کی قیمت میں اضافے سے سرکاری حج پیکیج 8لاکھ روپے سے بڑھ گیا 

  

لاہور (رپورٹ،میاں اشفاق انجم) سعودی عرب میں حج2022ء کے بڑھتے ہوئے اخراجات وزارت مذہبی امور کیلئے سرکاری حج پیکیج بنانا مشکل ہو گیا،سعودی حکومت نے منیٰ کے ٹینٹ اور ٹرانسپورٹ کی فیس کی مد میں جو1600ریال وصول کیے جاتے تھے بڑھا کر 5200 ریال کر دی ہے ویزہ اور انشورنس فیس480 ریال مانگ لی ہے۔ایئر لائنز نے حج کرایہ ایک ہزار ڈالر مانگ لیا ہے۔سعودی تعلیمات ابھی تک و صول نہیں ہوئیں ہیں حج پالیسی 2022ء کا ادھورہ اور نامکمل ڈرافٹ پڑا ہے۔وفاقی کابینہ کو منظوری کے لئے جانا ہے۔ وزیراعظم نے آتے ہی حج2022ء مہنگا نہ کرنے کی ہدایات جاری کر رکھی ہیں عملاً سرکاری پیکیج8لاکھ سے بڑھ رہا ہے۔ وفاقی سیکرٹری نے ڈی جی حج مکہ اور ڈائریکٹر حج مدینہ کو سرکاری حاجیوں کیلئے عمارتوں کے حصول کو سعودی تعلیمات آنے تک روکنے کی ہدایات جاری کر دی ہیں۔یاد رہے سعودیہ نے اس سال پاکستان کو81132 کوٹہ الاٹ کیا ہے۔وزارت مذہبی امور پہلے حج کوٹہ60فیصد خود رکھنے اور40فیصد پرائیویٹ سکیم کو دینے کے حق میں تھی،عملی طور پر حج پیکیج بنانے اور سستا کرنے میں ناکامی کے بعد ب60 فیصد پرائیویٹ اور40فیصد سرکاری رکھنے پر راضی ہو گئے ہیں۔ دو دن مزید اگر سعودی تعلیمات وصول نہیں ہوتیں تو عید کے سات دن بعد تک سعودیہ میں چھٹیاں ہو رہی ہیں۔ وزارت مذہبی امور کے سامنے حج پالیسی کی کابینہ سے منظوری حج پیکیج کو حتمی شکل دینے سمیت حج درخواستیں کب لیں گے اور ان کے لئے عمارتوں کا حصول کب مکمل کریں گے۔حاجیوں کی تربیت کب کریں گے، بڑے مراحل کا چیلنج درپیش ہے۔روزنامہ”پاکستان“ کو معلوم ہوا ہے ایک حلقے نے حکومت اور وزارت کو مشورہ دیا ہے اس سال آپ اگر عزت بچانا چاہتے ہیں تو سارا کوٹہ پرائیویٹ سیکٹر کو دے دیں، عزت بچائیں اور پرائیویٹ سیکٹر کو راضی بھی کر لیں۔معلوم ہوا ہے وزارت مذہبی امور مفتی عبدالشکور اور ان کی جماعت راضی ہو گئی ہے۔

حج پیکیج

مزید :

ملتان صفحہ آخر -