رشیدآباد،جامع مسجد الفردوس جدید فن تعمیر کا شاہکار

رشیدآباد،جامع مسجد الفردوس جدید فن تعمیر کا شاہکار

  

ملتان(سٹی رپورٹر)رشید آباد چوک پر واقع جامع مسجد الفردوس جدید(بقیہ نمبر35صفحہ6پر)

 فن تعمیر کا شاہکار ہے جسے جماعت اہلسنت کے اہم مراکز میں شمار کیا جاتاہے جامع مسجد الفردوس رشید آباد تقریباً 100سال قدیمی مسجد ہے جس کی بنیاد ملک عبد الحق نے رکھی تھی ماضی میں مسجد پانچ مرلہ اراضی پر واقع تھی جوکہ ایک کچے ہال اور بر آمدہ پر مشتمل تھی جبکہ وضو کے لئے نماز ہاتھ سے چلنے والے نلکے سے وضو کرتے تھے 1970میں مسجد کی پہلی بار توسیع کی گئی جس میں مسجد کے قریب موجود پلاٹ خرید کر مسجد اور اس سے ملحقہ مدرسہ بھی شامل کیا گیا جس پر دس لاکھ روپے سے زائد لاگت آئی تھی بعد ازاں سابق وزیر اعظم پاکستان مخدوم سید یوسف رضا گیلانی کے دور حکومت میں رشید آباد چوک کی توسیع اور فلائی اوورکی تعمیر کے دوران مسجد کا خاصہ حصہ سڑک میں آگیا تھا جس کی وجہ سے مسجد کوشہید کرکے دوبارہ سے 2008میں از سر نو تعمیر کیا گیا جس پر ایک کروڑ پچاس لاکھ روپے کی لاگت آئی تھی جامع مسجد الفردوس اس وقت 15مرلہ اراضی پر موجودہے جوکہ بیسمنٹ سمیت تین منزلہ بلڈنگ پر مشتمل ہے مسجد کے اوپر 150فٹ بلند مینار اور ایک سبز گنبد بھی موجود ہے یہ مینار اور گنبد دو ر دو سے تک نظر آتاہے مسجد سے ملحقہ مدرسہ جامعہ سعیدیہ عثمانیہ تعلیم القر آن رشید آبا د بھی موجودہے جس میں تقریباً 200سے زائد طالب علم قر آن کی تعلیم حاصل کرنے میں مصروف ہیں اس کے علاہ ہ جامعہ سعیدیہ البنات کے نام سے ایک بچیوں کا مدرسہ خوشحال کالونی میں بھی موجود ہے جس میں 400سے زائد بچیاں زیر تعلیم ہیں جامع مسجد الفردوس کے مہتم وخطیب معروف عالم دین علامہ خادم حسین سعیدی ہیں اس موقع پر علامہ خادم حسین سعیدی نے کہاہے کہ دینی مدارس اسلام کے قلعے ہیں ان قلعوں کو مضبوط بنانے کے لئے ہر مسلمان کو اپنا کردار اد ا کرنا ہوگا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -