بجلی بحران میں اضافہ، کاروبار ٹھپ، شہر شہر مظاہرے، میپکو کیخلاف نعرے 

بجلی بحران میں اضافہ، کاروبار ٹھپ، شہر شہر مظاہرے، میپکو کیخلاف نعرے 

  

ملتان،ٹھٹھہ صادق آباد،اوچ شریف،عبد ا لحکیم، میاں چنوں،باگڑسرگانہ (نیوزرپورٹر،نامہ نگا ر،نمائندہ پاکستا ن، نمائندہ خصوصی)شہر اور گردونواح میں میپکو حکام کی بے حسی کی وجہ سے رمضان المبارک کے بابر کت مہینہ میں بھی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ جاری ہے،شدید گرمی میں لوڈشیڈنگ سے عوام کو مشکلات کا سامنا شہر اور نواحی علاقوں میں گرمی کے آغاز اور ماہ مقدس رمضان المبارک میں ہر ایک گھنٹے کے ساتھ ایک(بقیہ نمبر56صفحہ6پر)

 گھنٹے کے علاوہ غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ بھی عروج پکڑ گیا، جس کی وجہ سے سٹی اورمحسن وال، تلمبہ اور گردونواح میں بجلی کی بندش کے باعث شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، جبکہ وولٹج کی کمی پیشی کی وجہ سے بھی عوام کی قیمتی اشیا خراب ہو رہی ہے، وولٹج کی کمی کی وجہ سے شدید گرمی میں اے سی بھی چلنے سے قاصر ہیں، شدید گرمی میں روزہ داروں کا برا حال ہو چکا ہے،عوامی حلقوں نے پاکستان کے نئے وزیر اعظم سے لوڈشیڈنگ کے مکمل خاتمے کی اپیل کی ہے۔دریں اثناء ماہ صیام میں دن رات کا لحاظ کئے بغیر وقفے وقفے سے غیر اعلانیہ بجلی کی بندش سے شہریوں کو شدید اذیت کا سامنا ہے گھروں میں عورتیں، بچے اور بوڑھے گرمی سے نڈھال جبکہ بازاروں میں دکاندار حضرات بھی شدید متاثر ہورہے ہیں شہریوں کی اعلی حکام سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ اس مسئلہ کو فوری حل کیا جائے جبکہ واپڈا حکام کا موقف ہے کہ شہر میں مختلف مقامات پر شکایات/ مرمت  کیوجہ سے بجلی بند کی جاتی ہے۔دریں اثناء واپڈا سب ڈویژن سرائے سدھو میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کم وولٹیج اور ٹرپنگ کا سلسلہ تھم نہ سکا بلکہ اس میں دن بدن اضافہ ہوتا جا رہا ہے کئی کئی گھنٹے دن اور رات کے اوقات میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے بزرگ بچے خواتین بالخصوص روزے داروں کو گھنٹوں اس جان لیوا عذاب کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے یہاں تک کہ گھروں اور مسجدوں میں پانی تک نایاب ہو جاتا ہے باگڑ سرگانہ کے مکینوں۔میاں علی رضا سرگانہ میاں محمد احمد سرگانہ میاں حسن عباس۔حافظ شاہد معاویہ سرگانہ۔ محمدندیم صفدر۔محمداسد۔محمدرضان قیصر۔محمدراشد۔بلال احمد ودیگر نے اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ رمضان المبارک کے مہینے میں بجلی کی طویل غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ سے لوگوں کی جان چھڑائی جائے۔دریں اثناء عید الفطر کے قریب آتے ہی اوچ شریف وگردونوح میں درزی بجلی کی لوڈ شیڈنگ سے تنگ آگئے۔عید الفطر کے قریب آتے ہی شہر و مضافاتی علاقوں میں درزی بجلی کی لوڈشیڈنگ سے تنگ آگئے، رش زیادہ ہونے کیوجہ سے کپڑوں کی سلائی کی بکنگ بھی بند کرنے کے بورڈ بھی آویزاں کر دیئے گئے، گزشتہ سال کی نسبت رواں سال کپڑوں کی سلائی کے نرخوں میں بھی 150 روپے سے 200 روپے تک کا اضافہ کر دیا گیاہے۔تفصیلات کے مطابق جیسے جیسے عیدالفطر قریب آرہی ہے اسی طرح کپڑوں کی سلائی کرنے والے درزیوں کے پاس نئے کپڑوں کی سلائی کا رش زیادہ ہونے لگا ہے، کپڑے سلائی کرنیوالے درزیوں نے کہا کہ کپڑے سلائی کرنے کا کام تو بہت زیادہ ہے لیکن بجلی کی اعلانیہ و غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ نے سارا نظام درہم برہم کرکے رکھ دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ 24 گھنٹوں کے دوران 5 سے 6 گھنٹے اعلانیہ جبکہ غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ بھی ساتھ ساتھ جاری ہے،جس سے کام پر بہت فرق پڑ چکا ہے۔ قیمتوں کے حوالے سے درزیوں کا کہنا ہے کہ دھاگے کی نلکی، بکرم، بٹن اور دیگر اشیاء اتنی مہنگی ہو چکی ہیں کہ خرچہ پورا کرنا مشکل ہوتا ہے، بجلی کے بل، قینچی، سلائی مشین، کاج کرانے اور دیگر کاموں پر بھی پیسے خرچ ہوتے ہیں۔درزیوں نے وزیراعظم پاکستان سے مطالبہ کیا ہے کہ بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ کیا جائے تاکہ پریشانیوں سے بچتے ہوئے شہریوں کو کپڑے سلائی کرکے بروقت دئیے جا سکیں۔جبکہ ٹھٹھہ صادق آباد جہانیاں پل 14 پل 132 نواح کے علاقوں میں بھی بجلی کی بدترین گھنٹوں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے شدید گرمی میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے باعث روزہ دار شہریوں کا برا حال ہو جاتا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -