عدالتی حکم کے بعد صدر اور گورنر کے پاس حلف لینے کے سوا کوئی راستہ نہیں بچا ، عطا تارڑ 

عدالتی حکم کے بعد صدر اور گورنر کے پاس حلف لینے کے سوا کوئی راستہ نہیں بچا ، ...
عدالتی حکم کے بعد صدر اور گورنر کے پاس حلف لینے کے سوا کوئی راستہ نہیں بچا ، عطا تارڑ 

  

لاہور ( ڈیلی پاکستان آن لائن )  مسلم لیگ (ن) کے رہنما عطا تارڑ نے کہا کہ لاہور ہائیکورٹ کے حکم کے بعد اب صدر اور گورنر کے پاس حلف لینے کے سوا کوئی راستہ نہیں بچا ، آج عدالت نے ٹائم فریم خود طے کر دیا  ہے ۔

لاہور ہائیکورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے  عطا تارڑ نے کہا کہ یہ افسوسناک امر ہے کہ لاہور ہائیکورٹ کے حکم پر صدر نے عمل نہیں کیا  حالانکہ  وزیر اعظم کی ایڈوائس بڑی واضح تھی کہ عدالتی فیصلے پر عمل کرایا جائے اور  نو منتخب وزیر اعلیٰ سے حلف لیا جائے ، لیکن اس کے باوجود  قانون پر عملدرآمد نہ کیا گیا ۔

 عطا تارڑ نے کہا کہ آج عدالت نے ٹائم فریم خود طے کر دیاہے ،  اب یہ کل تک  حلف دینے کے پابند ہیں ، قانون کو پامال کرنے کا سلسلہ بند ہونا چاہئے ، آج آئین کابھی بول بالا ہوا ہے ، قانون کی عزت بھی  بحال ہوئی ہے ، حمزہ شہباز شریف حلف اٹھائیں گے  ، اب  کسی صدر ، سپیکر ، گورنر کے پاس کوئی راستہ نہیں ہے کہ وہ قانون  کو پامال کریں ۔

رہنما مسلم  لیگ (ن) نے مزید کہا کہ گورنر صاحب سے کہتا ہوں کہ آپ بھلے آدمی تھے ، آپ کے خلاف ایڈوائس آگئی ہے ، اب آپ کو گھر  چلے جانا چاہئے ،  آپ کے پاس اخلاقی جواز نہیں بچا،  آپ عزت سے اپنے گھر چلے جائیں، آپ نے   گورنر ہاؤس کو  آئین شکنی  کا مرکز بنایا ہے  ، اس سے گورنر کے عہدے اور گورنر ہاؤس کی بے توقیری ہوئی ہے  ،   صدر پاکستان نے ثابت کیا کہ وہ عمران خان کے وفادار ہیں ۔

مزید :

قومی -علاقائی -پنجاب -