تنخواہوں کی عدم ادائیگی پر پنجاب میں میٹرو بس اور اورنج لائن کے سیکیورٹی سٹاف نے ہڑتال کر دی

تنخواہوں کی عدم ادائیگی پر پنجاب میں میٹرو بس اور اورنج لائن کے سیکیورٹی ...
تنخواہوں کی عدم ادائیگی پر پنجاب میں میٹرو بس اور اورنج لائن کے سیکیورٹی سٹاف نے ہڑتال کر دی

  

 لاہور ( ڈیلی پاکستان آن لائن )  لاہور پنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے تقریباً 2ہزار سیکیورٹی سٹاف اور چوکیداروں نے گزشتہ 2ماہ سے تنخواہوں کی عدم ادائیگی کے خلاف احتجاجاً کام بند کر کے دھرنا دیدیا۔

مقامی انگریزی جریدے" ڈان نیوز " کے مطابق  پنجاب حکومت نے اتھارٹی کیلئے  15 کروڑ روپے کی3 ماہ کی گرانٹ جاری کرنی تھی جو نہیں کی گئی  جس کے باعث اتھارٹی  تنخواہوں کی ادائیگی نہ کر سکی  ۔ احتجاج کے باعث عملے نے صفائی  کا کام روک دیا جس سے مختلف سٹیشنوں، بسوں اور ٹرینوں پر کچرے کے ڈھیر لگ گئے۔ ملازمین نے احتجاجاً میٹروبس اور اورنج لائن ٹرین کے سٹیشنوں پر دھرنا دیا۔

جریدے کے مطابق  ملازمین کا موقف ہے کہ ماس ٹرانزٹ اتھارٹی ان کی تنخواہیں جاری نہیں کر رہی اور وہ رمضان کے مہینے میں اپنے اہل خانہ کی ضروریات پوری کرنے کے لیے مشکلات کا شکار ہیں،  حکام نے گزشتہ 2 ماہ سے ان کی ادائیگی کے لیے کوئی اقدامات نہیں کیے، ملازمین نے تنخواہوں کی ادائیگی تک ہڑتال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے جنرل منیجر آپریشنز عزیر شاہ نے میڈیا کو بتایا کہ جیسے ہی حکومت کی جانب سے3 ماہ کی گرانٹ  جاری  ہو گی  ملازمین کی تنخواہیں ادا کر دی جائیں گی،   توقع ہے کہ گرانٹ عید سے قبل جاری کر دی جائے گی اور عملے کو تنخواہیں مل جائیں گی۔

جریدے کے مطابق گزشتہ ماہ کے آغاز پر  لاہور ویسٹ مینجمنٹ کمپنی (LWMC) کے1 ہزار سے زائد کارکنوں اور پنجاب ماس ٹرانزٹ اتھارٹی کے ساتھ کام کرنے والے سپروائزرز کو ملازمت سے ہٹا دیا گیا تھا،  اتھارٹی کا ایل ڈبلیو ایم سی کے ساتھ اورنج لائن میٹرو ٹرین (او ایل ایم ٹی ) اور میٹرو بس سروس کی صفائی برقرار رکھنے کا معاہدہ تھا جس کے تحت ٹرین میں 435 اور بس میں 590 ملازمین کام کر رہے تھے۔میٹرو بس سروس اور او ایل ایم ٹی حکام نے بس اور ٹرین میں صفائی برقرار رکھنے کے لیے ایک نجی کمپنی کی خدمات حاصل کیں اور ایل ڈبلیو ایم سی کے ساتھ معاہدہ منسوخ کر دیا۔

مزید :

قومی -علاقائی -پنجاب -