سعودی عرب میں 30 سال سے بیت الخلاء میں سموسے بنانے والا پکوان سینٹر پکڑا گیا، پھر اس کے ساتھ کیا کیا گیا؟ جانئے

سعودی عرب میں 30 سال سے بیت الخلاء میں سموسے بنانے والا پکوان سینٹر پکڑا گیا، ...
سعودی عرب میں 30 سال سے بیت الخلاء میں سموسے بنانے والا پکوان سینٹر پکڑا گیا، پھر اس کے ساتھ کیا کیا گیا؟ جانئے
سورس: Pixabay.com (creative commons license)

  

جدہ (ویب ڈیسک) سعودی عرب میں بلدیاتی ادارے نے حفظان صحت کے بر خلاف 30 سال سے بیت الخلاء میں سموسے بنانے والے پکوان سینٹر کو سِیل کر دیا۔

سعودی میڈیا کے مطابق جدہ کے ایک پکوان سینٹر پر بلدیاتی ادارے نے چھاپہ مار کارروائی کی جس کے دوران ہوش اُڑا دینے والے انکشافات ہوئے۔ پکوان سینٹر میں کھانے پینے کی اشیاء کی تیاری میں حفظان صحت کا خیال نہ رکھ کر شہریوں کی زندگیوں سے کھیلا جا رہا تھا۔

پکوان سینٹر پر چھاپے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ سموسہ بیت الخلاء میں بنایا جا رہا ہے جہاں لال بیگ اور دیگر حشرات الارض گھوم رہے ہیں۔

چھاپہ مار ٹیم کا کہنا ہے کہ رہائشی عمارت میں قائم پکوان سینٹر کے بیت الخلاء سے تعفن اُٹھ رہا تھا اور وہیں سموسے تَلے جا رہے تھے۔ ملازمین کے پاس حکومتی ہیلتھ کارڈ بھی نہیں تھا۔

اس پکوان سینٹر میں سموسوں کے علاوہ کھانے پینے کی دیگر اشیاء بھی تیار کی جاتی ہیں۔ حفظان صحت کے اصولوں کی پاسداری نہ کرنے پر بلدیاتی حکام نے پکوان سینٹر کو تاحکم ثانی سربمہر کردیا۔

مزید :

عرب دنیا -