امریکہ میں جسم فروش عورت کو 30سال قید کی سزا سنا دی گئی لیکن کس جرم میں؟

امریکہ میں جسم فروش عورت کو 30سال قید کی سزا سنا دی گئی لیکن کس جرم میں؟
امریکہ میں جسم فروش عورت کو 30سال قید کی سزا سنا دی گئی لیکن کس جرم میں؟
سورس: Instagram

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں اپنے چار گاہکوں کو نشہ آور دوا دے کر موت کے گھاٹ اتارنے والی جسم فروش عورت کو 30سال قید کی سزا سنا دی گئی۔ میل آن لائن کے مطابق 43سالہ انجلینا بیرینی نامی یہ جسم فروش خاتون نیویارک کے نواحی علاقے کوئنز کی رہائشی تھی جہاں اس نے مقتول گاہکوں کو لوٹنے کی غرض سے انہیں نشہ آور ادویات دیں۔ 

مرنے والے لوگوں میں 33سالہ اطالوی نژاد شیف اینڈریا زیمپرونی بھی شامل تھا جو نیویارک کے معروف ریسٹورنٹ سیپریانی ڈولشی میں ہیڈ شیف کی ملازمت کرتا تھا۔ اینڈریا کی لاش ایلمرسٹ موٹل میں ایک کچرے کے ڈبے سے برآمد ہوئی تھی۔ اسی طرح دیگر مقتولین کی لاشیں بھی مختلف جگہوں سے برآمد ہوئیں۔

پولیس نے تحقیقات شروع کیں تو یہ ہولناک انکشاف ہوا کہ قتل کی یہ سفاکانہ وارداتیں ایک جسم فروش عورت کر رہی ہے۔ وہ اپنے گاہکوں کے بلانے پر جاتی اور وہاں انہیں نشہ آور ادویات دے کر ان کے پاس موجود رقم وغیرہ لوٹ لیتی تھی۔ انجلینا کی بہن کا کہنا ہے کہ اس کی بہن کوجرم کی نسبت زیادہ سخت سزا دی گئی ہے۔ وہ لوگوں کو نشہ انہیں لوٹنے کے لیے دیتی تھی، قتل کرنا اس کی نیت نہیں ہوتی تھی۔ اس نے کہا کہ ”میں اپنی بہن کی سزا کے خلاف اعلیٰ عدالت میں اپیل کروں گی۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -