دہشتگردی کو مخصوص نسلی یا مذہبی گروپوں سے وابستہ نہ کیا جائے : چین

دہشتگردی کو مخصوص نسلی یا مذہبی گروپوں سے وابستہ نہ کیا جائے : چین

بیجنگ(آئی این پی)چین نے دہشتگردی کو جڑ سے اکھاڑنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔تاکہ عالمی مسائل کا سیاسی حل تلاش کیا جاسکے۔عالمی برادری دہشتگردی کو مخصوص نسلی یا مذہبی گروپوں کے ساتھ وابستہ کرنے سے باز رہے۔اقوام متحدہ میں چین کے خصوصی نائب مستقل نمائندے ووہیٹاؤ نے اظہار خیال کرتے ہوئے زور دیا کہ بین الاقوامی برادری کو یکساں معیار سامنے رکھنے چاہیں اور دہشتگردی کو کسی صورت برداشت نہیں کرنا چاہیے۔دہشتگردی کا مقابلہ کرنے کے لیے بلا امتیازرویہ اختیار کرنا چاہیے۔عالمی سطح پر دہشتگردی کے خلاف لڑنے کے لیے ہمیں ممالک کی خودمختیار کا احترام کرنا چاہیے ۔

انہوں نے مزید کہا کہ ملکوں کی بڑی ذمہ داری یہ ہے کہ وہ دہشتگردی کے خلاف جنگ پر توجہ مرکوز رکھیں اقوام متحدہ کے چارٹر کے اصولوں اور مقاصد کی پیروی کریں اور اپنے قائدانہ کردار سے اقوام متحدہ اور اس کی سلامتی کونسل کی مدد کریں انہوں نے بین الاقوامی برادری سے کہا کہ وہ سرحد کے اس پار دہشتگردوں کو آنے جانے سے روکنے میں کردار ادا کریں۔دہشتگرد تنظیموں کو عراق اور شام کے حالیہ بحران میں بھاری نقصان اٹھانا پڑا ہے۔لیکن ان کی تحریک اور دہشتگردوں کی واپسی ابھی تک ممالک کی سلامتی اور استحکام کے لیے شدید خطرے کا باعث ہے۔انہوں نے کہا کہ چین دہشتگردی کے خطرات سے نمٹنے کے لیے تمام ممالک کے ساتھ مل کر کام کرنے کو تیار ہے۔دہشتگردی پوری انسانیت کی مشترکہ دشمن ہے۔اس کی کوئی سرحدیں نہیں ہوتی۔اور کسی ملک کے لیے بھی تنہا اس کا مقابلہ کرنا ممکن نہیں ہے۔ اس لیے بین الاقوامی برادری کو سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں پر موثر طور پر عمل کرنا چاہیے اور دہشتگردی کا مقابلہ کرنے کے لیے مشترکہ تعاون کو مضبوط بنانا چاہیے۔

مزید : عالمی منظر


loading...