گستاخانہ شیطانی اعلان تہذیبوں میں تصادم کرانیکی سازش ہے،علماء

گستاخانہ شیطانی اعلان تہذیبوں میں تصادم کرانیکی سازش ہے،علماء

  

لاہور (سٹی رپورٹر)9ستمبر کو گستاخانہ خاکوں کی نمائش کے اعلان کیخلاف تحفظ ناموس رسالت ریلی اور احتجاجی مظاہرہ مال روڈ لاہور کی تیاری سلسلے میں علماء کا اجلاس ہوا اجلاس میں عالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی ناظم نشرواشاعت مولانا عزیز الرحمن ثانی، مولانا قاری علیم الدین شاکر، پیررضوان نفیس، مبلغ ختم نبوت مولانا عبدالنعیم ، قاری جمیل الرحمن اخترمولانا قاری عبدالعزیز، مولانا سید ضیاء الحسن شاہ،مولانا خالد محمود، مولانا قاری ظہورالحق، مولانا سعید قار، مولانا عبدالشکور یوسف و دیگر علماء نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ یہ گستاخانہ شیطانی اعلان تہذیبوں میں تصادم کرانے اور دنیا کا امن تباہ کرنیکی ناپاک سازش ہے۔ اس گستاخانہ نمائش کے اعلان سے دنیا کی ایک چوتھائی قوم دو ارب مسلمانوں کے جذبات انتہائی بری طرح مجروح ہوئے ہیں عالمی ادارے اور مسلم امہ و مہذب دنیا اس شیطانی گستاخانہ نمائش کو رکوانے کیلئے اپنا موثر و بھرپور کردار ادا کرے یو این او اپنے چارٹرڈ کے مطابق ہالینڈ کی پارلیمنٹ کے اس شیطانی اعلان کیخلاف کارروائی کرے کیونکہ اقوام متحدہ کے انسانی حقوق چارٹرڈ میں کسی بھی مذہب کے ماننے والوں کی مقدس شخصیات کی توہین سراسر ناقابل تلافی جرم ہے عالمی سطح پر تمام مذاہب کی مقدس شخصیات کی گستاخی کے سدباب کے لئے سخت قوانین بنائے جائیں۔ ناموس رسالت کا تحفظ ایمان کا بنیادی تقاضا ہے۔ گستاخانہ خاکوں کی نمائش کرنے والے امت مسلمہ کے مجرم ہیں۔ گستاخانہ خاکوں کی نمائش سے بڑھ کر کوئی انتہا پسندی نہیں ہو سکتی۔ ناموس رسالت کے تحفظ کے معاملے میں کسی مصلحت کا شکار نہیں ہوں گے۔ کروڑوں مسلمانوں کے جذبات مجروح کرنے والے انسانیت کے بدترین دشمن ہیں۔ ہم ناموس رسالت کے تحفظ کے لئے اپنی جانیں بھی قربان کر سکتے ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -