تھانہ کوٹ لکھپت ، راہزنی، نوسر بازی اور چھینا جھپٹی کی وارداتیں عام

تھانہ کوٹ لکھپت ، راہزنی، نوسر بازی اور چھینا جھپٹی کی وارداتیں عام

  

لاہور(لیاقت کھرل)ماڈل ٹاؤن ڈویژن کا تھانہ کوٹ لکھپت کرائم کے اعتبار سے پوری ڈویژن میں ٹاپ کرگیا ہے اس تھانے کی حدود میں نوسربازی، راہزنی اور چھینا جھپٹی سمیت موٹرسائیکل چوری کے واقعات عام ، پولیس کے ہاتھوں سنگین واقعات میں اشتہاری قرار دیے جانے والے 101خطرناک ملزمان پولیس کے لیے چیلنج اور مکینوں کے لیے درد سر بن کر رہ گئے ہیں جو کہ علاقہ میں نقص امن پھیلانے میں مصروف ہیں پولیس نفری کم ہونے کے باعث جرائم پیشہ افراد کے آگے بے بس نظر آئی ہے یہ انکشافات تھانہ کوٹ لکھپت کے سروے اور شہریوں کے تاثرات کے دوران سامنے آئے ہیں۔ اس موقع پر شہریوں کا کہنا تھا کہ تھانے سے چند فرلانگ کے فاصلے پر ڈاکو شام ہوتے ہی لوٹ مار شروع کردیتے ہیں۔ رکھ چندرائے روڈ پر روزانہ کی بنیاد پرڈاکو لوٹ مار کرتے ہیں۔ چوکی انچارج رکھ چندرائے روڈ اور اہلکار اطلاع ملنے کے باوجود چوکی میں آرام کرتے رہتے ہیں، جبکہ جنرل ہسپتال میں کئی سال سے نوسربازوں اور موٹرسائیکل چور گروہ کے ارکان نے لوٹ مار مچا رکھی ہے اس موقع پر شہری اکبر اور شرور نے بتایا کہ تھانہ کوٹ لکھپت کی حدود میں امن و امان کی صورتحال انتہائی ناقص ہے پولیس امن و امان قائم کرنے کی بجائے جرائم پیشہ افرادکے رحم و کرم پر ہے۔ علاقہ میں بااثر افراد نے پولیس کو رہنے کے لیے گھر دیے ہوئے ہیں جس کی وجہ سے پولیس بااثر افراد اور جرائم پیشہ عناصر کے سامنے بے بس ہے محض خانہ پری کے طور پر رکھ چندرائے روڈ ،کوٹ لکھپت روڈ، چونگی امرسدھو روڈ پر ناکے لگا کر شہریوں کو تنگ کرنے کے علاوہ کوئی دوسراکام نہیں۔شہریوں کا کہنا تھا کہ تھانہ سے چند فرلانگ کے فاصلہ پر بابر چوک جوکہ خونی چوک میں تبدیل ہوچکا ہے کئی سال سے جرائم پیشہ اور قبضہ گروپ کے ارکان منفی سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔ حال ہی میں الیکشن کے دوران قبضہ گروپ کے ارکان نے فائرنگ کرکے پورے علاقے کا امن و امان تباہ کیا اور فائرنگ کی زد میں دو راہگیر لڑکے اپنی جان کی بازی ہار گئے انویسٹی گیشن پولیس کا تفتیشی افسر سیف اللہ نیازی ملزموں کی گرفتاری کی بجائے قبضہ گروپ کے ارکان کے ڈیرے پر اکثر آرام کرتا ہے شہری عبدالرحمن نے بتایا کہ اس علاقہ میں ہر دوسرے چوراہے میں اسلحہ کی نمائش اور اشتہاری ملزمان سرعام گھوم رہے ہیں۔ شہری لیاقت علی نے بتایا کہ وہ آشیانہ روڈ کا رہائشی ہے اُس کے 27سالہ بیٹے راشد ملک کو ثاقب وغیرہ نے فائرنگ کرکے زخمی کیا تین دن سے پولیس مقدمہ درج نہیں کررہی ہے ایک شہری نے بتایا کہ پولیس نے اُس کے دو بیٹوں کو حراست میں لے رکھا ہے۔ تھانہ فیکٹری ایریااور اب اس تھانہ میں بیٹوں کی رہائی کے لیے آیا ہوں پولیس بات تک نہیں سن رہی ہے۔اس موقع پر شہری نواب خان نے بتایا کہ اُس کی بیوی جنرل ہسپتال میں داخل ہے۔ ہسپتال کے مین گیٹ پر نوسربازنے اُسے لوٹ لیا ہے ۔ شہری افضل نے بتایا کہ جنرل ہسپتال سے اُس کی موٹر سائیکل چوری کرلی ہے۔پولیس نے مقدمہ درج کررکھا ہے تین ماہ سے انویسٹی گیشن پولیس چکر لگوارہی ہے۔جب کہ اس حوالے سے ایس ایچ او عارف خان نے بتایا کہ اُن کی تعیناتی کے دوران موٹرسائیکل چوری اور نوسربازی کے واقعات زیادہ تر جنرل ہسپتال میں رونما ہورہے ہیں تاہم سنگین واقعات کی روک تھام کے لیے صبح شام کوشش جاری ہے اس کے لیے پولیس گشت بھی بڑھا دیا ہے۔

مزید :

علاقائی -