پنجاب کی 25رکنی کابینہ کا اعلان ، علیم خان سینئر وزیر مقرر ، صوبے میں سویڈش ماڈل کی گورننس کا منصوبہ

پنجاب کی 25رکنی کابینہ کا اعلان ، علیم خان سینئر وزیر مقرر ، صوبے میں سویڈش ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر ، مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں )25رکنی پنجاب کابینہ کا اعلان کر دیا گیا،پنجاب میں جن ارکان اسمبلی کو کابینہ میں شامل کیا گیا ہے ان میں حافط ممتاز احمد کو ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن اور نارکوٹکس کنٹرول ،مخدوم ہاشم بخت کو خزانہ ،سمیع اللہ چودھری کو خوراک ،فیض الحسن چوہان کو اظلاعات اور ثقافت ،سبطین خان کو زراعت ،یاسر ہمایوں سرفراز کو ہائیر ایجوکیشن ،میاں محمود الرشید کو ہاؤسنگ ، اربن ڈویلپمنٹ اینڈ پبلک ہیلتھ انجینئر رنگ،میاں اسلم اقبال صنعت و تجارت اور سرمایہ کاری ، راجہ بشارت کو قانون اور پارلیمانی امور ، علیم خان سینیر وزیر ہونگے اور انہیں لوکل گورنمنٹ اور کمیونٹی ڈویلپمنٹ، راجا راشد حفیظ کو ریونیو ، ڈاکٹر یاسمین راشد کو پرائمری اینڈ سیکینڈری ہیلتھ سپیشلائزڈ ہیلتھ اور میڈیکیشن ایجوکیشن ،تیمور خان کو یوتھ افیئرز ، مراد راس کو سکول ایجوکیشن محسن لغاری کو آب پاشی انصر مجید نیازی کو لیبر اور افرادی قوت کی وزارتیں دء گئی ہیں جبکہ سردار آصف نکئی ، حافظ عمار یاسر، ملک نعمان لنگڑیال ، حسنین دریشک ، ملک محمد انور ، چودھری ظہیر الدین ، اور ہاشم ڈوگر کے محکموں کا اعلان بعد میں کیا جائیگا، اس سے قبل وزیرِاعظم عمران خان کے زیرِ صدارت پنجاب کابینہ کی تشکیل سے متعلق اہم اجلاس ہوا، کابینہ کے انتخاب کیلئے عمران خان نے 40 امیدواروں کے انٹرویو کئے۔ وزرا کی کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے ماہرین پر مشتمل سپیشل ٹاسک فورس قائم کی جائے گی جس کی قیادت پارٹی کے سینئر رہنما کریں گے۔ ٹاسک فورس سہہ ماہی بنیادوں پر وزیراعلی سمیت وزرا کی کارکردگی کا جائزہ لے گی۔ خراب کارکردگی والوں کو پہلے وارننگ، پھر وزارت سے فارغ کیا جا سکتا ہے۔اجلاس میں رہنماؤں کو سویڈن کے گورننس ماڈل کے بارے میں بتایا گیا۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ وزرا کو اپنی صرف ایک سٹاف گاڑی استعمال کرنے کی اجازت ہو گی، وفاق کی طرح وزیرِاعلیٰ سیکٹریٹ میں بھی اضافی گاڑیوں کی نیلامی کی جائے گی۔وزیرِاعظم عمران خان نے پنجاب حکومت کو بھی کفایت شعاری کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ حکمرانوں کو عوام کے لئے آئیڈیل ہونا چاہیے، سابق حمکرانوں کی فضول خرچی اور شاہانہ اخراجات کی روایات ختم کر دیں۔عمران خان نے کہا کہ عوام کو پاکستان تحریکِ انصاف کی حکومتوں سے بہت توقعات وابستہ ہیں، عوام کو ہم سے تبدیلی کی امید ہے، ہم تبدیلی لا کر دکھائیں گے۔وزیرِاعظم نے تمام وزارتوں میں چیک اینڈ بیلنس رکھنے کی ہدایت کرتے ہوئے تمام وزرا سے کہا کہ وہ اپنی اپنی وزارتوں میں میرٹ اور گوڈ گورننس یقینی بنائیں۔۔ سینئر پارٹی رہنماؤں اور ماہرین پر مشتمل ٹاسک فورس قائم کی جائے گی جو سہہ ماہی بنیادوں پر وزیرِاعلیٰ اور وزرا کی کارکردگی کا جائزہ لے گی، خراب کارکردگی پر پہلے وارننگ دی جائیگی، بہتری نہ آنے پر وزارت سے فارغ کر دیا جائے گا۔پنجاب میں سویڈن طرز کی حکومت چلائی جائے گی۔ سویڈن میں نظام حکومت تین سطحوں پر مشتمل ہے۔ قومی سطح کی حکومت کے پاس قانون سازی اور اداروں کو چلانے کے اختیارات ہوتے ہیں۔ریجنل سطح کی حکومت کے پاس صحت اور ٹیکس وصولی کی ذمہ داری ہوتی ہے۔ تعلیم، ٹرانسپورٹ، ہاؤسنگ، واٹر سپلائی، پبلک ویلفئر اور دیگر تمام اختیارات لوکل گورنمنٹ کے پاس ہوتے ہیں۔ کسی بھی پارٹی کو پارلیمنٹ تک رسائی کے لیے مجموعی ووٹوں کا چار فیصد ووٹ لینا ضروری ہے۔۔دریں اثناخیبرپختونخواکابینہ کوحتمی شکل دے دی گئی،ابتدائی طورپر 10 رکنی کابینہ کا(آج) پیر کو حلف اٹھانے کا امکان ہے۔میڈیا روپرٹ کے مطابق شہرام ترکئی،عاطف خان،اشتیاق ارمڑ،تیمورجھگڑاکو کابینہ میں شامل کیا گیا ہے ٗ سلطان خان،ضیااللہ بنگش، اکبرایوب،ڈاکٹرامجدکوبھی ذمہ داری ملنے کاامکان ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق پہلے مرحلے میں 2 مشیربھی کابینہ کاحصہ ہوں گے،سابق کابینہ کے 8 ارکان نئی کابینہ میں شامل کرلئے گئے ہیں جبکہ پہلی بارمنتخب ہونے والوں کومشیراورمعاون خصوصی بنانے کافیصلہ کیا گیا ہے ۔رپورٹ کے مطابق کابینہ ارکان کوقلمدان دینے کافیصلہ وزیراعظم عمران خان خودکریں گے۔

پنجاب کابینہ

مزید :

کراچی صفحہ اول -