لاہور میں 10نئی پناہ گاہوں کی منظوری،لنگر خانے کھولنے کا فیصلہ

لاہور میں 10نئی پناہ گاہوں کی منظوری،لنگر خانے کھولنے کا فیصلہ

  

 لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کی زیرصدارت منعقدہ اجلاس میں پناہ گاہوں میں ٹھہرنے والے افراد کیلئے سہولتوں کو مزید بہتر بنانے کے لئے اقدامات کا جائزہ لیا گیا- وزیر اعلی عثمان بزدار نے لاہور میں 10 نئی پناہ گاہیں بنانے کی منظوری دیتے ہوئے کہا کہ نئی پناہ گاہیں کرائے کی عمارتوں میں بنائی جائیں اور نئی پناہ گاہیں بنانے کیلئے مقامات کی جلد نشاندہی کی جائے - انہوں نے کہا کہ پناہ گاہوں کے نئے ماڈل کا دائرہ کار مرحلہ وار دیگر بڑے شہروں تک بڑھایا جائے گا۔ وزیر اعلی عثمان بزدار نے پنجاب پناہ گاہ اتھارٹی تشکیل دینے کی بھی اصولی منظوری دیتے ہوئے کہا کہ یہ اتھارٹی پناہ گاہوں کے انتظامات اور دیکھ بھال کی ذمہ دار ہو گی جبکہ پناہ گاہوں کی عمارتوں کی دیکھ بھال محکمہ تعمیرات و مواصلات کے ذمے ہو گی۔پناہ گاہوں میں سہولتوں کی مانیٹرنگ کیلئے ڈیجیٹل مینجمنٹ سسٹم بنایا جائے گااورپنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے تعاون سے مانیٹرنگ کا نظام وضع کیا جائے گا۔تمام پناہ گاہوں کی جیو ٹیگنگ ہوگی اور روزانہ کی بنیاد پر ڈیٹا اکٹھا کیا جائے گا- وزیر اعلی نے ہدایت کی کہ لاہور کی اہم سڑکوں پر پناہ گاہوں کی نشاندہی کے حوالے سے سائن بورڈز لگائے جائیں اور لاہور کے داخلی راستوں پر بھی پناہ گاہوں کی نشاندہی کیلئے نمایاں طور پر بورڈز لگائے جائیں۔انہوں نے کہا کہ سڑکوں پر سوئے افراد کو پناہ گاہوں میں شفٹ کرنے کیلئے مزید گاڑیاں لی جائیں اورپناہ گاہوں کے حوالے سے مخیر حضرات کا بھی تعاون حاصل کیا جائے -وزیر اعلی عثمان بزدار نے کہا کہ منشیات کے عادی افراد اور گداگروں کیلئے بحالی مراکز قائم کئے جائیں گے۔اجلاس میں پناہ گاہوں کے باہر نادار اور غریب افراد کیلئے لنگرخانے کھولنے کا فیصلہ کیا گیا- وزیر اعلی عثمان بزدار نے کہا کہ لنگر خانوں کے ذریعے غریب افراد کو کھانا کھلایا جائے گا۔

عثمان بزدار

مزید :

صفحہ اول -