سیما قتل کیس،قانونی  دفاع کیلئے ڈسٹرکٹ بار  نوشہرہ کی خدمات حاصل

  سیما قتل کیس،قانونی  دفاع کیلئے ڈسٹرکٹ بار  نوشہرہ کی خدمات حاصل

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ) امن جرگہ نے مبینہ طور پر جنسی زیادتی کے بعد بے دردی سے قتل ہونے والی ننھی سیما کے کیس کی قانونی دفاع کیلئے ڈسٹرکٹ بار نوشہرہ کی خدمات حاصل کر دی 10رکنی لیگل ایڈ سیل تشکیل دینے کا اعلان ننھی مقتول سیما کے کیس میں تفتیشی افسران نے دوران تفتیش ملوث ملزم کی عمر کم ظاہر کر کے بچانے کی کوشش کی ہے کیس میں میڈیکل بورڈ تشکیل دینے کا مطالبہ کر دیا گیا نوشہرہ میں سودی کاروبار کے خلاف ناطم حاجی اعجاز کی قیادت میں ناظمین اورعمائدین نے بھر پور تعاون کی یقین دھانی کرائی ہے اس سلسلے میں امن جرگی کے مرکزی چیئر مین سید کمال شاہ باچہ نے میڈیا کو بتایا کہ نوشہرہ کے علاقہ حمزہ رشکہ میں مبینہ طور پر جنسی زیادتی کی شکار ہونے والی ننھی مقتول بچی سیما کیس میں نوشہرہ پولیس نے دوران تفتیش جن قانونی کمزوریوں کا مظاہرہ کیا ہے ان کمزوریوں کو دور کرنے اور ملوث ملزم کو کیفر کردار تک پہنچانے کیلئے اپنے ساتھ وفد میں شریک عابد سلطان اور میاں رحیم زادہ باچا کے ہمراہ ڈسٹرکٹ بار نوشہرہ کا دورہ کیا اور ڈسٹرکٹ بار نوشہرہ کے صدر میاں ارشد جان ایڈوکیٹ سے تفصیلی ملاقات ہوئی ملاقات میں ڈسٹرکٹ بار نوشہرہ کے جنرل سیکرٹری شاہ فہد، ریاض خان یڈوکیٹ، ظاہر شاہ آفریدی ایڈوکیٹ اور پیر ذوالفقار باچہ بھی موجودتھے ملاقات میں مقتول ننھی بچی سیما کے ملزم کو کیفر کردار تک پہنچانے کیلئے سینئر وکلاء پر مشتمل 10رکنی لیگل سیل تشکیل دے دیا گیا کیونکہ نوشہرہ پولیس نے دوران تفتیش ملوث ملزم کی عمر 21یا 22سال کی بجائے 16یا 17سال ظاہر کیا ہے جو کہ غلط ہے کیونکہ 16یا 17سال کی عمر والے ملزم پر قانون کے تحت ساز کا اطلاق نہیں ہوتا انہوں نے کہا کہ سیما قتل کیس کیلئے تشکیل کردہ لیگل ایڈ سیل ملزم کی اصل عمر جاننے کیلئے  عدالت سے میڈیکل بورڈ تشکیل دینے کا بھی مطالبہ کریں گی تاکہ ملزم سزا سے نہ بچ سکے انہوں نے کہا کہ نوشہرہ میں ناظم حاجی اعجاز خان کی قیادت میں ناظمین اور عمائدین نوشہرہ نے سودی کاروبار کرنے والوں کے خلاف جدو جہد کرنے میں بھر پور تعاون کی یقین دھانی کرائی ہے اس لئے بہت جلد نوشہرہ میں امن جرگہ کی تنظم سازی مکمل کر دی جائے گی۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -