صنعتوں کی بحالی سٹیٹ بینک کی اولین ترجیح ہے:رضا قمر

صنعتوں کی بحالی سٹیٹ بینک کی اولین ترجیح ہے:رضا قمر

  

 فیصل آباد (سٹی رپورٹر)  بیمار صنعتی یونٹوں کو ترجیحی طور پر چلانے کیلئے فریقین کو لچک کا مظاہرہ کرنا ہوگا جبکہ سٹیٹ بینک آف پاکستان بینکوں اور بیمار یونٹوں کے درمیان نتیجہ خیز مذاکرات شروع کرنے کیلئے ہر ممکن کوششیں کرے گا۔ یہ بات گورنر سٹیٹ بینک آف پاکستان رضا باقر نے بیمار صنعتی یونٹوں کی بحالی کیلئے فیصل آباد چیمبر آ ف کامرس اینڈانڈسٹری سے زوم کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بتائی۔ انہوں نے کہا کہ صنعتوں کی بحالی سٹیٹ بینک کی اولین ترجیح ہے تاکہ پیداواری سرگرمیوں کو بڑھا کے روزگار کے زیادہ سے زیادہ مواقع پیدا کئے جا سکیں۔ انہوں نے نئی ڈپٹی گورنر  سیما کامل اور دیگر اعلیٰ افسران سے مشاورت کے بعد ہدایت کی کہ وہ بیمار یونٹوں کی بحالی کیلئے فوری طور پر کام شروع کر دیں  انہوں نے بتایا کہ بیمار یونٹوں کی فہرست اور دیگر تفصیلات آپ کو مل چکی ہیں۔ آپ متعلقہ بینکوں سے مل کر ان کے مسئلوں کو جلد حل کرائیں۔ اس سے قبل فیصل آباد چیمبر آ ف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدر رانا محمد سکندر اعظم خاں نے بیمار یونٹوں کی بحالی کیلئے گورنر سٹیٹ بینک کی طرف سے خصوصی دلچسپی لینے پر ان کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ ان کے دور میں ہی ان کوششوں کو نتیجہ خیز بنایا جا سکے۔ انہوں نے گورنر سٹیٹ بینک کو فیصل آباد آنے کی دعوت دی اور کہا کہ وہ محرم کے فوراً بعد بیمار یونٹوں کے مالکان سے براہ راست میٹنگ کا اہتمام کریں تاکہ اس مسئلے کو حل کی راہ پر ڈالا جا سکے۔ چناب گروپ کے میاں محمد لطیف نے بتایا کہ اس وقت 12۔13اہم یونٹ بیمار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام یونٹ قرض میں کسی قسم کی معافی نہیں چاہتے۔ وہ صرف قرضوں کی ری شیڈولنگ چاہتے ہیں تاکہ ان یونٹوں کو جلد از جلد چلا کے بینکوں کی قسطیں بھی ادا کی جا سکیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ ان یونٹوں کو چلانے سے ملک کو ایک ارب ڈالر کا اضافی زرمبادلہ جبکہ ایک لاکھ افراد کو نوکری ملے گی۔ اس موقع پر سابق وفاقی وزیر چوہدری مشتاق علی چیمہ، اظہر مجید شیخ، خالد حبیب، ملک رضوان اور دیگر بیمار یونٹوں کے مالکان بھی موجود تھے۔ 

رضا باقر

مزید :

صفحہ آخر -