میلسی: 30 سالہ فاترالعقل شخص بازیاب  محبوس کو طبی امداد فراہم کرنے کا حکم

  میلسی: 30 سالہ فاترالعقل شخص بازیاب  محبوس کو طبی امداد فراہم کرنے کا حکم

  

 ملتان (خصو صی  رپورٹر)ہائیکورٹ ملتان بنچ کے جج جسٹس محمد سرفراز ڈوگر نے پولیس تھانہ کرم پور میلسی کی جانب سے 30 سالہ (بقیہ نمبر21صفحہ6پر)

دماغی طور پر کمزور شخص کو بازیاب کرائے جانے پر محبوس شخص کو طبی امداد فراہم کرنے کا حکم دیا ہے۔قبل ازیں پولیس نے فاترالعقل شخص کو بازیاب کراکے 14 جولائی کو عدالت پیش کیا جسے عدالت نے والدہ کے ساتھ بھجوانے اور تحفظ فراہم کرنے کا حکم دیا تھا تاہم ملزمان محمد عمران، جاوید اور ربنواز وغیرہ نے اسے دوبارہ اغوا کرلیا تھا جس پر دوسری بار عدالت سے رجوع کیا گیا۔ فاضل عدالت میں خاتون اللّٰہ رکھی نے کونسل ملک  محمد نعیم اقبال کے ذریعے حبس بے جا کی درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ اسکے دماغی کمزور بیٹے زاہد حمید کو ملزمان محمد عمران، محمد جاوید اور ربنواز وغیرہ نے دوبارہ محبوس کیا ہوا ہے چونکہ محبوس شخص کے نام کافی رقبہ ہے جو وہ ہتھیانہ چاہتے ہیں اور رجسٹرار کے روبرو بیان دلوانا چاہتے ہیں فاضل عدالت نے پولیس کو حکم دیا کہ اگر کوئی شخص دوبارہ ایسا کرے تو اسکے خلاف ضابطہ کارروائی عمل میں لائی جائے۔ تاہم ملزمان کو پولیس کی مکمل آشیر باد حاصل ہے جس کے باعث وہ یہ عمل دہراتے رہتے ہیں۔

حکم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -