عوام ناراض‘ پولیس رویہ درست کرنے کیلئے وقت درکار‘ انعام غنی 

عوام ناراض‘ پولیس رویہ درست کرنے کیلئے وقت درکار‘ انعام غنی 

  

ملتان + رحیم یار خان(وقائع نگار‘ بیورو رپورٹ)  ایڈیشنل انسپکٹر جنرل آف پولیس ساؤتھ پنجاب انعام غنی نے کہا ہے کہ جنوبی پنجاب میں 27 ہزار پولیس افسران و اہلکار کے ساتھ بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کی کوشش کریں گے، انتظامی یونٹ بننے سے اداروں کی کارکردگی میں بہتری آئے گی، خطہ میں یقیناً ترقی کے نئے باب کا آغاز ہو گا۔ حکومت تمام (بقیہ نمبر32صفحہ6پر)

مسائل سے پوری طرح آگاہ ہے اور وزیر اعلی پنجاب خطہ پر خصوصی توجہ دے رہے ہیں۔ پولیس عوام کی جان و مال کی حفاظت کے لیے شب و روز کوشاں ہے۔ تاجروں کا تحفظ یقیناً معیشت کا تحفظ ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دورہ رحیم یارخان کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ ایڈیشنل انسپکٹر جنرل آف پولیس ساؤتھ پنجاب انعام غنی کے رحیم یارخان پہنچنے پر آر پی او زبیر احمد دریشک، ڈی پی او منتظر مہدی، ایس پی انوسٹی گیشن اکرم خان نیازی، ایس ڈی پی اوز، ڈی ایس پی ٹریفک، ڈی ایس پی پٹرولنگ اور ڈی ایس پی لیگل نے انہیں خوش آمدیدکہا اس موقع پر پولیس کے چاک و چوبند دستے نے سلامی پیش کی، انہوں نے ڈی پی او آفس میں پولیس افسران سے میٹنگ کی، ڈی پی او آفس میں ہونے والی رینویشن کا افتتاح کیا، پولیس خدمت سینٹر اور آئی ٹی برانچ گئے اور ان کی کارکردگی کاجائزہ لیا اور ڈی پی او منتظر مہدی نے انہیں بریفنگ دی۔ وہ پولیس لائن گئے جہاں پر انہوں نے یاد گار شہداء پر پھول چڑھائے اور فاتحہ خوانی کی، انہوں نے پولیس لائن میں کانسٹیبلوں کی نئی رینوویٹ ہونے والی بیرکس کا ملاحظہ کیا اور اہلکاروں کو بہترین رہائشی سہولیات فراہم کرنے پرڈی پی او منتظر مہدی کے اقدام کو سراہا ایڈیشنل آئی جی انعام غنی، آر پی او زبیر احمد دریشک اور ڈی پی اومنظر مہدی نے پولیس لائن میں شجر کاری کے تحت پودے لگائے۔ انہوں نے آر پی او زبیر احمد دریشک اور ڈی پی او منتظر مہدی کے ہمراہ صدر سرکل میں محرم الحرام کے ایک جلوس پر کئے جانے والے سکیورٹی انتظامات کا جائزہ لیتے ہوئے اطمنان کا اظہار کیا، وہ پریس کلب رحیم یارخان پہنچے جہاں پر صدر پریس کلب ممتاز احمد مونس، جنرل سیکرٹری محمد افتخار اور ممبران نے انہیں گرم جوشی کے ساتھ خوش آمدید کہا اس موقع پر صدر پریس کلب نے استقبالیہ الفاظ ادا کرنے کے بعد انہیں خطاب کی دعوت دی جس پر انہوں نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت ساؤتھ پنجاب کے پاس 27000 پولیس افسران و اہلکار پر مشتمل نفری موجود ہے اور ہم انشاء  اللہ پوری قوت کے ساتھ عوام کی جان ومال کے تحفظ کے لیے کوشاں اور بہتر کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کے لیے کوشاں رہیں گے۔ باقی پولیس کو عوامی امنگوں اور ترقی یافتہ ملکوں کے برابر لانے لیے وقت درکار ہے لیکن ہم بہتری کی جانب ضرور جا رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ انتظامی یونٹ کے قیام سے اداروں کو کم علاقہ میں بہتر کارکردگی کا موقع ملے گا جس کے مثبت اثرات ہر خاص و عام آدمی کی زندگی پر پڑیں گے اور خطہ میں ترقی کے ایک نئے دور کا آغاز ہو گا ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ حکومت تمام مسائل سے پوری طرح آگاہ ہے اور وزیر اعلی پنجاب جنوبی پنجاب پر خصوصی توجہ دے رہے ہیں۔ انہوں نے اس موقع پر جرنلسٹس کی جانب سے کئے گئے سوالوں کے مفصل جوابات دئیے اور کہا کہ جنوبی پنجاب میں ہم اپنی تمام تر صلاحیتوں اور حاصل شدہ وسائل کے ساتھ میدان عمل میں ہیں اور اس سلسلہ میں ہمیں آپ حضرات کا بھی ساتھ درکار ہے جس پر ہم باہم مل کر آگے بڑھیں گے میڈیا کا مثبت رول معاشرہ میں اہمیت کا حامل ہے۔ بعد ازاں وہ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری گئے جہاں صدر چوہدری شفیق علیم، سینئر نائب صدر چوہدری افتخار انجم، چیئرمین پنجاب فلور ملز ایسوسی ایشن چوہدری عبدالرؤف مختار، صوبائی پارلیمانی سیکرٹری و ایم پی اے چوہدری شفیق، ایگزٹو ممبرز چوہدری غلام عباس چیمہ و دیگر ممبران کے ساتھ میٹنگ کرتے ہوئے کہا کہ تاجر کا تحفظ اصل میں معیشت کا تحفظ ہے جو کہ کسی بھی ملک میں ریڑھ کی ہڈی کی اہمیت رکھتی ہے اس موقع پر تاجران نے بھی انہیں بھر پور تعاون کا یقین دلایا آر پی او زبیر احمد دریشک اور ڈی پی او منتظر مہدی بھی ان کے ہمراہ تھے ایڈیشنل آئی جی ساؤتھ پنجاب انعام غنی نے کہا کہ پولیس جان و مال کے تحفظ میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھے گی۔ انہوں نے دورہ کے دوران ماڈل پولیس اسٹیشن اقبال آباد کا دورہ کرکے عوام کو دی جانے والی سہولیات کا جائزہ لیا اور کہا کہ ایسے تھانہ جات کی تعمیر اور پولیس کی بہتر کارکردگی محکمہ کے وقار کو بلند کرنے میں مدد گار ثابت ہوگی یہ تجربہ کامیاب رہا تو مستقبل میں جنوبی پنجاب کے تمام تھانوں کو ماڈل پولیس اسٹیشنز کی طرز پر بنا دیا جائے گا جس سے عوام کو فوری انصاف کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔ پولیس قربانیوں کے باوجود عوام پولیس محکمہ سے خوش نہیں‘ بڑی وجہ پولیس کا رویہ ہے‘ جسے ٹھیک کرناپڑے گا‘ جنوبی پنجاب کی پولیس بھی کے پی کے کی پولیس بن سکتی ہے‘ جس کی تربیت کے لئے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔ کچہ میں پولیس بچوں کو تعلیم کی سہولت فراہم کررہی ہے۔ یہ ذمہ داری پولیس کی نہیں بلکہ محکمہ تعلیم کی ہے‘ نارتھ پنجاب کی بجائے جنوبی پنجاب میں جرائم کی شرح کم ہے‘ نفری کی کمی کے باعث مسائل درپیش ہیں‘جنہیں جلد حل کرلیا جائے گا۔ ان خیالات کااظہار ایڈیشنل آئی جی جنوبی پنجاب انعام غنی نے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر منتظر مہدی کے ہمراہ ڈسٹرکٹ پریس کلب میں بڑی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ قانون پرعمل درآمد کریں گے اور انصاف کے تقاضے بھی پورے کیے جائیں گے۔ جھوٹے مقدمات کااندراج کرنے والے پولیس افسران کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ انہوں نے کہاکہ پولیس شہادتیں دے رہی ہے جس کے باوجود عوام پولیس کے محکمہ سے خوش نہیں‘ جس کی بڑی وجہ پولیس کارویہ ہے۔ جسے ٹھیک کرناپڑے گا۔ رحیم یار خان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کمپلیکس میں ایڈیشنل آئی جی جنوبی پنجاب انعام غنی نے دورہ کیا۔ صدر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسڑی چوہدری محمد شفیق علیم نے مہمانان خصوصی کا استقبال کیا اور آنے والے تمام مہمانوں کوخوش آمدید کہا اور ضلع رحیم یار خان میں امن و امان سمیت ٹریفک کے مسائل تین صوبوں کے سنگم پر واقع ضلع رحیم یار خان میں قائم چیمبر آف کامرس اینڈ انڈ سٹری اور بزنس مین کمیونٹی کے مسائل سے آگا ہ کیا۔ صدر چوہدری محمد شفیق علیم نے ڈی پی او منتظر مہدی کی ضلع رحیم یار خان کی عوام کے لیے خدمات کو سراہا۔چیئرمین پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن پنجا ب و ضلعی صدر انجمن تاجران چوہدری عبدالرؤف مختارنے تاجر برادری کے مسائل سمیت فلور مل انڈسٹری کے حوالے سے درپیش آنے والے مسائل سے متعلق بریفنگ دی انہوں نے کہا کہ فلور مل انڈسٹری کو اپنی پروڈکٹ کی نقل وحمل سمیت دوسرے اضلاع کے لیے مشکلات کا سامنا ہے اور کاروباری افراد کو سمگلر اور آٹا چور کہا جا تا ہے جو کہ میں سمجھتا ہوں کہ بزنس کمیونٹی کے ساتھ بہت بڑی زیاد تی  ہے ان مسائل کے حل کے لیے پنجاب پولیس اپنا کردار ادا کرئے۔ نمائندہ ایم این اے چوہدری فاروق وڑائچ نے کہا کہ پولیس کی بہتری کے لیے تمام وسائل بروئے کا رلائے جائیں۔ صوبائی پارلیمانی سیکرٹری چوہدری محمد شفیق نے کہا پولیس محرم الحرم اور دیگرقو می تہواروں پر سیکورٹی مسائل کے حل کے لیے کسی غریب آدمی کی ٹرانسپورٹ کی پکڑ دھکڑ نہ کریں تا کہ نئے پاکستان میں روایتی پولیس کلچر کا خاتمہ ہو۔ڈی پی او منتظر مہدی نے اپنے خطاب میں کہا کہ رحیم یار خان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے ڈسڑکٹ گورنمنٹ کو سیف سٹی پروجیکٹ کے لیے خطیر رقم مہیا کی جس سے شہر میں امن وامان کے حوالے سے کافی بہتری آئی اور پولیس آئی ٹی ٹیکنالوجی کے ذریعے جرائم پیشہ افراد پر نظر رکھے ہوئے ہے۔ ریجنل پولیس آفیسر سردار زبیردریشک نے کہا کہ ضلع رحیم یار خان کی عوام پر ْامن شہری ہیں خاص طور پر یہاں کی بزنس کمیونٹی اور پولیس کے درمیان اچھے تعلقات ہونے کے ساتھ ساتھ تما م مسائل کے حل کے لیے تعاون کرتے ہیں۔ ایڈیشنل آئی جی جنوبی پنجاب انعام غنی نے کہا کہ رحیم یار خان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسڑی کے تعاون سے پروجیکٹ سیف سٹی دینے پر مشکور ہیں جس سے ضلع کے امن وامان  میں بہتری اور پولیس کو جرائم کنٹرول کرنے میں مددملے گی۔انہوں نے مزید کہا ضلع رحیم یار خان کے دورے کا مقصد عوام کے مسائل حل کرنے کے ساتھ ساتھ ضلع کی جغرافیائی حدود کے تعین سمیت محرم الحرم کے روٹس کا جائزہ لینا تھا اور ضلع رحیم یار خان کی بزنس کمیونٹی سے ملاقات اور جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے قیا م کے ثمرات سے آگاہی دینا تھااور ضلع رحیم یار خان کی پولیس کی کارکردگی سمیت وزیراعظم عمران خان وزیر اعلی سر دارعثمان بزدارکے ویثزن کے مطابق پولیس اصلاحات کو یقینی بنانا کرپشن کا خاتمہ اور عوام کوفوری انصاف فراہم کرنا ہے۔اس موقع پر صدر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری چوہدری محمد شفیق علیم نے  صوبائی پارلیمانی سیکرٹری چوہدری محمد شفیق، چیئرمین پا کستان فلور ملز ایسوسی ایشن وضلع صدر انجمن تاجران چوہدری عبدالرؤف مختار کے ہمراہ معزز مہمانان گرامی کو یا د گاری شیلڈز دیں۔اس موقع پر تقریب میں سابق صدور میاں محمد امتیاز احمد،میاں محمود احمد، شیخ عماد الدین، سنیئرنائب صدر چوہدری افتخار انجم ایگزیکٹو ممبر ایف پی سی سی آئی چوہدری شوکت حیات،چیمبر ایگزیکٹو ممبر چوہدری اعظم شبیر، چوہدری عبدالرزاق، چوہدری خالد رفیق، غلام عباس چیمہ، حافظ عمر فاروق، خلیل احمد، محمد جاوید اقبال، ریاض الرحمن، چوہدری شاہد اقبال، وقاص اکرم وڑائچ، چوہدری شاہد مشتاق، میڈم تسنیم کوثر، ایگزیکٹو ممبر پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن چوہدری عثمان محمود،چوہدری آصف رشید، سجاد وڑائچ،چوہدری نعیم شفیق، مجتبی ملہی، ڈاکٹر طالوت سلیم باجوہ،   سیٹھ عبدالماجد،چوہدری محمد اشرف،شفقت حسین، سابق نائب صدر چیمبر آف کامرس میا ں صفدر حسین، حافظ عبدالرزاق،حفیظ اقبال و دیگر بھی موجود تھے۔

انعام غنی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -