صوبہ پنجاب کا خواندگی اور غیر رسمی بنیادی تعلیم کا شعبہ باہم مل کر حل کرینگے، سمیرا صمد 

    صوبہ پنجاب کا خواندگی اور غیر رسمی بنیادی تعلیم کا شعبہ باہم مل کر حل ...

  

راولپنڈی(پ ر) الائیٹ پاکستان اور صوبہ پنجاب کا خواندگی اور غیر رسمی بنیادی تعلیم کا شعبہ باہم مل کر صوبے میں شرح خواند گی میں اضافے کے لیے منظم کوششیں کرینگے جہاں تقریباً نو ملین بچے مختلف وجوہات کی بناء پر سکول نہیں جاتے ہیں۔ اس سلسلے میں صوبہ پنجاب کے خواندگی اور غیر رسمی بنیادی تعلیم کے شعبے کے دفتر میں ایک تقریب منعقد کی گئی جہاں پر سیکرٹری برائے خواندگی سمیرا  سمد  اور الائیٹ پاکستان کے ڈپٹی چیف آف پارٹی کامران افتخار نے معاہدے پر دستخط کیے۔ اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے پنجاب کے وزیر برائے خواندگی و غیر رسمی بنیادی تعلیم راجہ راشد حفیظ نے کہا کہ پہلی دفعہ خواندگی اور غیر رسمی بنیادی تعلیم کے لیے پالیسی تشکیل دی گئی ہے جس کے نفاذ کے لیے مختلف شعبہ جات میں اشتراک کے ذریعے صوبے میں جامع تعلیمی نظام کو فروغ دیا جائے گا۔ الائیٹ پاکستان کے کنٹری ہیڈ ڈاکٹر طارق چیمہ کا کہنا تھا کہ ان کی بھرپور کوشش ہو گی کہ ابھی تک جو بچے سکولوں سے باہر ہیں اور جو بچے سکولوں میں داخل ہیں اور تعلیم حاصل کر رہے ہیں ان کے کرونا وائرس کی وجہ سے ہونے تعلیمی نقصان کو فی الفور پورا کیا جائے۔ انہوں نے کہا ایک منفرد لائحہ عمل کے ذریعے بچوں کی تعلیم اور خواندگی کی شرح میں بہتری پیدا کی جائے گی۔اس معاہدے کے تحت صوبے میں ماڈل سکول تعمیر کیے جائیں گے اور اس کے علاوہ پہلے سے موجود سکولوں میں انفراسٹرکچر اور بچوں کو سٹیشنری، کتابیں اور وردیاں بھی فراہم کی جائیں گی۔ اس کے علاوہ اساتذہ کو تربیت بھی فراہم کی جائے گی تاکہ وہ طلبہ کو بہترین طریقوں سے معیاری تعلیم و تربیت فراہم کرسکیں۔ 

مزید :

صفحہ آخر -