"ملزمان نے ڈاکٹر ماہا کو بلیک میل کر کے زیادتی کانشانہ بنایا اور۔۔۔"  ڈاکٹر ماہا خود کشی کیس میں نیا موڑ سامنے آ گیا

"ملزمان نے ڈاکٹر ماہا کو بلیک میل کر کے زیادتی کانشانہ بنایا اور۔۔۔"  ڈاکٹر ...

  

کراچی (ویب ڈیسک) ڈاکٹر ماہا خود کشی کیس میں نیا موڑ سامنے آ گیا ہے پولیس نے بر وقت کارروائی کرتے ہوئے تین ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے۔

دنیا نیوز کے مطابق شہر قائد میں خودکشی کرنیوالی ڈاکٹر ماہا کے والد نے الزام عائد کیا ہے کہ ماہا کو اس کے دوست اور 2 ڈاکٹرز پریشان کرتے تھے جنہوں نے خودکشی پر مجبور کیا۔والد کی جانب سے ڈاکٹر ماہا کی خودکشی کی وجہ بننے والے 3 کرداروں کے خلاف مقدمے کے اندراج کے لیے درخواست دے دی، جس کے بعد پولیس نے مقدمہ درج کر لیا۔

پولیس ذرائع کے مطابق درخواست میں متوفیہ کے والد نے اپنی بیٹی ماہا علی کو تشدد کا نشانہ بنانے، زخمی کرنے اور نشے کا عادی بنانے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ تینوں افراد کی جانب سے ٹینشن دینے کے باعث ان کی بیٹی نے خودکشی کی۔

دوسری طرف ڈاکٹر ماہا کی خودکشی کے معاملے پر 3افراد کےخلاف مقدمہ درج کر لیا گیا، مقدمہ گذری تھانے میں ورثاءکی مدعیت میں درج کیا گیا، نامزد ملزمان میں جنید،ڈاکٹرعرفان اور وقاص شامل ہیں، مقدمہ میں دھمکانے، دباو¿ ڈالنےاورزہریلی چیزکھلانے کی دفعات شامل ہیں۔ تینوں ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

ایف آئی آر کے متن کے مطابق ملزمان نے ڈاکٹر ماہا کو بلیک میل کر زیادتی کانشانہ بنایا، ایس ایس پی ساو¿تھ کے مطابق والد کے الزامات کی روشنی میں تفتیش شروع کردی ہے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -