ہاتھیوں کا غم دور کرنے کے لیے اُنہیں چرس پلانے کا تجربہ

ہاتھیوں کا غم دور کرنے کے لیے اُنہیں چرس پلانے کا تجربہ
ہاتھیوں کا غم دور کرنے کے لیے اُنہیں چرس پلانے کا تجربہ

  

وارسا(مانیٹرنگ ڈیسک) پولینڈ کے دارالحکومت وارسا کے چڑیا گھر میں موجود تین ہاتھیوں کا غم دور کرنے کے لیے انہیں چرس پلانے کا تجربہ شروع کر دیا گیا ہے۔ دی گارڈین کے مطابق وارسا چڑیا گھر میں چار ہاتھی رہتے تھے۔ ان میں سے ایک مادہ ہاتھی کی رواں سال مارچ میں موت واقع ہو گئی جس کے بعد سے باقی تین ہاتھی شدید غم کی حالت میں رہ رہے تھے۔ چنانچہ ہاتھیوں کو اس غم سے نکالنے اور ایک بار پھر معمول کی زندگی کی طرف لانے کے لیے ماہرین نے انہیں ’طبی چرس‘ دینے کا تجربہ کرنے کا فیصلہ کیا۔

رپورٹ کے مطابق مرنے والے اس مادہ ہاتھی کا نام ’ایرنا‘ تھا او روہ ان چاروں میں سب سے عمر رسیدہ اور سائز میں بڑی تھی۔ باقی چاروں چھوٹے ہاتھیوں کو ایرنا سے بہت رغبت تھی۔ چنانچہ وہ اس کے بعد شدید دباﺅ کا شکار ہو گئے اور فریڈزیا نامی ایک مادہ ہاتھی تو ہمہ وقت باقاعدہ ماتم کرتی رہتی تھی۔ صدمے اور شدید ذہنی دباﺅ کی سب سے زیادہ علامات بھی فریڈزیا میں ہی نظر آئیں۔ ایرنا کی موت سے قبل فریڈزیا کی دوسری مادہ ہاتھی بوبا کے ساتھ کافی دوستی تھی اور دونوں ہمہ وقت کھیلتی رہتی تھیں لیکن ایرنا کی موت کے بعد سے فریڈزیا بوبا کے ساتھ کھیلنا بھی بھول گئی تھی۔ ماہرین نے اسے غنیمت موقع جانتے ہوئے فریڈزیا اور دیگر ہاتھیوں پر ’طبی چرس‘ کے تجربات شروع کر دیئے، جن کے نتائج آنا تاحال باقی ہیں۔ رپورٹ کے مطابق یہ پہلا موقع ہے کہ جانوروں پر ’طبی چرس ‘ کا تجربہ کیا جا رہا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -