عمران خان کو ”مین آف دی ایئر“ کیوں دیا گیا؟مولانا فضل الرحمان نے ایسی بات کہہ دی کہ ’کپتان کے کھلاڑی“غصے سے لال پیلے ہو جائیں گے

عمران خان کو ”مین آف دی ایئر“ کیوں دیا گیا؟مولانا فضل الرحمان نے ایسی بات ...
عمران خان کو ”مین آف دی ایئر“ کیوں دیا گیا؟مولانا فضل الرحمان نے ایسی بات کہہ دی کہ ’کپتان کے کھلاڑی“غصے سے لال پیلے ہو جائیں گے

  

اوکاڑہ(ڈیلی پاکستان آن لائن)جمعیت علمائے  اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ اے پی سی کا انعقاد حالات کا تقاضا ہے، ملک و قوم کے وسیع تر مفاد کیلئے اپوزیشن کا اتحاد ضروری ہے،عمران خان کو نالائقی پر ”مین آف دی ایئر“قرار دیا گیا ،میاں شہباز شریف سے رابطہ میں مشترکہ حکمت عملی بنانے پر اتفاق ہوا ہے ،پاکستانی  عوام کو حکمرانوں کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑیں گے۔

نجی ٹی وی کے مطابق میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے  مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ پاکستان کے موجودہ سیاسی،سماجی،معاشی اور معاشرتی حالات اس بات کا تقاضا کرہے ہیں کہ آل پارٹیز کانفرنس منعقد کی جائے اور موجودہ حکمرانوں سے عوام کو جلد ازجلد نجات دلائی جائے ،ملک و قوم کے وسیع تر مفاد،استحکام پاکستان اور ملک کی نظریاتی سرحدوں کے تحفظ کیلئے اپوزیشن جماعتوں کا اتحادضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ میاں شہباز شریف سے رابطہ ہوا ہے جو خوش آئند بات ہے،اس ملاقات میں مشترکہ لائحہ عمل اپنانے پر اتفاق ہوا ہے، تمام اپوزیشن جماعتوں سے ملکر ایک ٹھوس اور کامیاب حکمت عملی اپنائیں گے۔ عمران خان کو ”مین آف دی ایئر“قراردینے کے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ عمران خان کو نالائقی اور نااہلی کی بنیاد پر ”مین آف دی ایئر“ قرار دیا گیا ہے ۔

مزید :

قومی -