پاکستان بھارت دو طرفہ تعلقات کی بہتری کو مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے استعمال کریں گے ‘مختار وازہ

پاکستان بھارت دو طرفہ تعلقات کی بہتری کو مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے استعمال ...

سرینگر (اے پی پی)مقبوضہ کشمیرمیںکل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنماء مختار احمد وازہ نے پاکستان اور بھارت کی طرف سے دوطرفہ تعلقات کو بہتر بنانے کی غرض سے کئے گئے اقدامات کا خیر مقدم کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ دونوں ممالک تعلقات کی بہتری کے ماحول کومسئلہ کشمیر کے پرامن حل کےلئے استعمال کریںگے ۔ کشمیر میڈیا سروس کے مطابق مختار احمد وازہ نے ایک بیان میں واضح کیا کہ پاک بھارت تعلقات کی بہتری میں حائل سب سے بڑی رکاوٹ حل طلب مسئلہ کشمیر ہے۔انہوںنے کہاکہ مسئلہ کشمیر کو کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کئے بغیر نہ دو طرفہ تعلقات میں بہتری اور نہ ہی جنوبی ایشیاءمیں پائیدار امن و سلامتی کی ضمانت دی جاسکتی ہے ۔انہوںنے گزشتہ ایک ماہ کے دوران پاکستان اور بھارت کے درمیان سیاسی، سفارتی ، فوجی اور سماجی سطح پر مختلف مذاکرات کو اہم قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان اقدامات سے دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں بہتری آئے گی، تاہم انہوںنے اس مقصد کیلئے مسئلہ کشمیر کا پائیدار حل انتہائی اہم ہے ۔ انہوںنے دونوں ہمسایہ ممالک پر زوردیا کہ وہ مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے سہ فریقی مزاکرات شروع کریں ۔مختار احمد وازہ نے بھارت پر زوردیا کہ وہ اپنی روایتی ہٹ دھرمی پر مبنی پالیسی ترک کرتے ہوئے مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے سازگار فضا قائم کرے ۔

جس کیلئے مقبوضہ علاقے سے بھارتی فوجی انخلاء، وہاں رائج کالے قوانین کی منسوخی اور تمام سیاسی نظربندوں کی فوری رہائی ضروری ہے۔حریت رہنماءنے کہا کہ مسئلہ کشمیر عالمی سطح پر تسلیم شدہ مسئلہ ہے ۔انہوںنے عالمی برادری سے اپیل کی کہ وہ مسئلہ کشمیر کے دیرپا حل میں اپنا اہم کردار ادا کرے ۔

مزید : عالمی منظر