دوران رپورٹنگ صحافی کے لیے ہنسی روکنا ناممکن ہو گیا کیونکہ

دوران رپورٹنگ صحافی کے لیے ہنسی روکنا ناممکن ہو گیا کیونکہ

لندن (نیوز ڈیسک) برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے رپورٹر کو نیٹن سمرویل کی ایک ویڈیو نے یوٹیوب ویب سائٹ پر بے پناہ مقبولیت حاصل کرلی ہے کیونکہ اس میں دکھائی گئی رپورٹنگ انتہائی منفرد قسم کی ہے۔ کونیٹن مشرقی وسطیٰ میں ایک رپورٹ ریکارڈ کرواتے ہوئے بتا رہے ہیں کہ ان کے پیچھے 8 ٹن منشیات جلائی جارہی ہے جس میں چرس، ہیروئن اور افیون شامل ہے اور اس کے ساتھ ہی وہ ہنسنا شروع کردیتے ہیں۔ ریکارڈنگ روک کر وہ حواس بحال کرتے ہیں اور کیمرہ مین کو دوبارہ کام شرع کرنے کا کہتے ہیں۔اس دفعہ وہ بمشکل آدھاجملہ بولتے ہیں اور ایک دفعہ پھر حواس باختہ نظر آتے ہیں اور اسی طرح تیسری کوشش میں وہ ایک لفظ بولے بغیر سرپکڑ کر بیٹھ جاتے ہیں اور وہ اور کیمرہ مین دونوں قہقہے لگانا شروع کردیتے ہیں۔ کونیٹن کہتے ہیں کہ وہ اتفاق سے جلتی ہوئی منشیات کے بہت قریب چلے گئے تھے اور ان کے دھوئیں نے ان پر ہذیانی کیفیت طاری کردی تھی جس کی وجہ سے وہ اپنے حواس پر قابو نہیں رکھ پارہے تھے اور کبھی سنجیدہ ہوجاتے اور کبھی ہنسنا شروع کردیتے۔

مزید : علاقائی