محبوبہ کو مار کر اس کی لاش سے انتہائی گھناؤناعمل کرنے والے کینڈین کو سزا

محبوبہ کو مار کر اس کی لاش سے انتہائی گھناؤناعمل کرنے والے کینڈین کو سزا
محبوبہ کو مار کر اس کی لاش سے انتہائی گھناؤناعمل کرنے والے کینڈین کو سزا

  

اوٹاوا (نیوز ڈیسک) فحش فلموں کے اداکار کینیڈین شہری لوکا مگنوٹا کو تاریخ کے سفاک ترین قاتلوں میں شمار کیا جاسکتا ہے کیونکہ اس نے اپنے چینی دوست کو قتل کرکے اس کے اعضاءکاٹ کر ڈاک کے ذریعے مختلف سکولوں اور دفاتر میں بھیج دئیے۔

وہ انوکھا ملک جہاں کی عوام ملکہ کا انتخاب کرتی ہے اور بادشاہ بے بس ہوتا ہے

تینتیس سالہ جون لین چین سے کینیڈا پڑھنے کیلئے آیا تھا لیکن 32 سالہ لوکا کی درندگی کا نشانہ بن گیا۔ مجرم نے جون کو قتل کرنے کے بعد اس کے اعضاءکاٹ کر علیحدہ علیحدہ کردئیے اور پھر ایک پاﺅں کینیڈا کی حکمران پارٹی کنزرویٹو پارٹی کے دفتر میں، دوسرا پاﺅں لبرل پارٹی کے دفتر میں اور ہاتھ اور دیگر اعضاءکئی سکولوں میں ڈاک کے ذریعے بھجوادئیے۔ اس کی گرفتاری کیلئے عالمی پیمانے پر تلاش کی گئی اور بالآخر اسے جرمنی سے گرفتار کرلیا گیا۔ اگرچہ اس نے نفسیاتی عارضے شیزوفرینیا کا بہانہ بنا کر جان بچانے کی کوشش کی لیکن عدالت کا کہنا تھا کہ دیگر ثبوتوں کے علاوہ اس کی ایک ای میل بھی مل چکی ہے جس میں قتل سے چھ ماہ پہلے اس نے ایک برطانوی صحافی کو بتایا تھا کہ وہ بلیوں کو قتل کرنے کے شوق کو انسانوں کے قتل تک لے جائے گا۔عدالت نے درندہ صفت مجرم کو عمر قید کی سزا سنا دی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس