امریکہ میں پاکستانی لڑکا لڑکی نے وہ کردیا جو صدیوں سے صرف پاکستانی والدین کرتے تھے

امریکہ میں پاکستانی لڑکا لڑکی نے وہ کردیا جو صدیوں سے صرف پاکستانی والدین ...
امریکہ میں پاکستانی لڑکا لڑکی نے وہ کردیا جو صدیوں سے صرف پاکستانی والدین کرتے تھے

  


نیویارک (مانیٹرنگ ڈیسک)ریاست کیلیفورنیا میں اپنے والدین کے ساتھ رہنے والی ثناءنعیم جب چھ سال کی تھیں تو پاکستان سے امریکا آئیں۔ ان کا خاندان روایتی نظریات کا حامل تھا اور وہ خود بھی خاصی شرمیلی تھیں لہٰذا امریکی طور طریقے سیکھنے میں کچھ کمزور ہی واقع ہوئی تھیں۔ وہ مختصر لباس پہننے یا پارٹیوں میں جانے کی بجائے گھر میں رہنے کو ترجیح دیتیں اور اکثر وقت مطالعے پر صرف کرتیں۔ یونیورسٹی آف کیلیفورنیا سے گریجو ایشن مکمل کرنے کے بعد بالآخر وہ جانز ہاپکنز یونیورسٹی سے ماسٹرز کرنے میں بھی کامیاب ہوگئیں اور پھر سوشل پالیسی کے مضمون میں پی ایچ ڈی شروع کردی۔

مزید جانئے: نئی سازش؟ یورپی کمپنی مسلم خواتین کو ’کنوارہ پن‘ بیچنے لگی

اب ان کی عمر 21 سال ہوچکی تھی اور ان کی والدہ ان کی شادی کے بارے میں سخت فکر مند تھیں۔ روایتی ارینجڈ میرج کا طریقہ کار اختیار کرتے ہوئے ان کے والدین نے رشتے کی تلاش شروع کردی۔ مختلف اوقات پر 5 مختلف لڑکے انہیں دیکھنے آئے لیکن ثناءنے ان سب کو رد کردیا۔ ان کی والدہ بہت فکر مند تھیں اور پوچھتی رہتی تھیں کہ آخر انہیں کس چیز کی تلاش ہے۔ ثناءکہتی ہیں کہ انہوں نے بالآخر فیصلہ کیا کہ وہ اپنی شادی خود ہی طے کریں گی اور ایک دن یونہی میچ میکنگ ویب سائٹ Coffee Meets Bagel جائن کرلی۔ اس ویب سائٹ نے ان کے لئے ریحان شیخ نامی شخص کا انتخاب کیا۔ یہ صاحب بھی بچپن میں پاکستان سے امریکا آئے تھے اور فارمیسی کے مضمون میں پی ایچ ڈی کرنے کے بعد مڈل سیکس ہسپتال میں ایک اچھی ملازمت کررہے تھے۔

ثناءکا کہنا ہے کہ انہوں نے جونہی ریحان کی تصویر دیکھی تو دل ہار بیٹھیں۔ اتفاق سے ریحان کی شخصیت بھی انہیں بہت پسند آئی۔ طویل عرصے تک تو دونوں صرف انٹرنیٹ کے ذریعے ہی رابطے میں رہے، اور بالآخر فروری کے مہینے میں ریحان شیخ ان سے ملنے کے لئے آن پہنچے۔ پہلی ملاقات میں ہی دونوں 5 گھنٹے تک باتیں کرتے رہے۔ 6فٹ ایک انچ قد کے مالک ریحان شیخ ثناءکو بہت ہی پسند آئے تھے۔ تقریباً ایک ماہ تک ملاقاتوں کا سلسلہ جاری رہنے کے بعد ایک دن ثناءنے پوچھ لیا ”ہمارا آپس میں کیا رشتہ ہے؟“ ریحان نے سوال کا مطلب سمجھتے ہوئے بتایا کہ وہ شادی سے پہلے تقریباً ایک سال کا عرصہ ایک دوسرے کو جاننے کے لئے وقف کرنا چاہتا ہے۔ دراصل یہ ان کی شرارت تھی، کیونکہ اس کے بعد جلد ہی وہ اپنے خاندان والوں کے ساتھ ثناءکے گھر آئے اور شادی کی پیشکش کردی۔ 20 نومبر کو دونوں کی شادی سلام سنٹر میں منعقد ہونے والی ایک پروقار تقریب میں سرانجام پائی، جس میں ثناءاور ریحان کے والدین اور عزیز و اقارب بھی شریک تھے۔

دولہا اور دلہن کی خوشی چھپائے نہیں چھپتی تھی جبکہ دونوں خاندان بھی بے حد مسرور تھے۔ یہ ایک ارینجڈ شادی ہی تھی،جسے دونوں خاندانوں کی بھرپور حمایت اور شفقت بھی حاصل تھی، مگر یہ تھوڑی مختلف ضرور تھی۔ اسے والدین کی بجائے لڑکی اور لڑکے نے خود ارینج کیا تھا۔

(اخبار نیو یارک ٹائم سے ماخوز)

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...