رواں سال 16 دہشت گردوں کو سزائے موت اور29 کو عمر قید کی سزائیں سنائی گئیں

رواں سال 16 دہشت گردوں کو سزائے موت اور29 کو عمر قید کی سزائیں سنائی گئیں

 لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالتوں میں یکم جنوری سے 23 دسمبر تک16دہشت گردوں کو سزائے موت اور 29کو عمرقید کی سزا ئیں سنا ئیں جبکہ انسداد دہشت گردی کی عدالتوں نے 400ملزمان کی سنگین نوعیت کے مقدمات میں ضمانتیں خارج کیں۔انسداد دہشت گردی کی عدالت نے یکم جنوری سے 23دسمبر تک اغواء برائے تاوان، جیل وارڈن قتل کیس ،قادیانی عبادت گاہ حملہ کیس سمیت دیگر سنگین مقدمات میں ملوث 16مجرموں کو سزائے موت اور 29ملزمان کو عمر قید جبکہ دیگر الزامات میں 10سال سے 15سال تک کی سزائیں سنائی گئیں۔انسداد دہشت گردی کی عدالت نے400ملزمان کی درخواست ضمانتیں خارج کیں۔انسداددہشت گردی کی عدالت سے 3کیس فوجی عدالتوں میں منتقل کئے گے جبکہ 3کیس پوپا عدالت میں بھجوائے گئے ہیں۔انسداد دہشت گردی کی عدالت میں اہم فیصلہ جو2015ء میں زیادہ موضوع بحث بنا رہا ان میں مصطفی کانجو اور اس کے 4ساتھی تھے جنہیں انسداد ددہشت گردی کی عدالت نے گواہوں کے منحرف ہونے پر بری کردیاتھاتاہم اب عدالت عظمی کی جانب سے ازخود نوٹس لینے پر دوبارہ اس کیس کی عدالت عالیہ میں سماعت جاری ہے ۔واضح رہے کہ انسداد دہشت گردی کی عدالت میں 2015ء میں 23دسمبر تک اہم زیرسماعت کیسوں میں سانحہ ماڈل ٹاؤن ، قصورویڈیوسکینڈل ،یوحنا آباد سانحہ، جوزف کالونی ، شاہین ایرلائن کے پائلٹ عصمت محمود،ساندہ گرجا ہنگامہ آرائی اور کوٹ رادھا کشن کیس شامل ہیں۔

سزا ئیں

مزید : علاقائی


loading...