سعودی عرب اور خلیجی ممالک نے بڑے اسلامی ملک کو مشکل میں ڈال دیا، پابندی کی دھجیاں اُڑا دیں

سعودی عرب اور خلیجی ممالک نے بڑے اسلامی ملک کو مشکل میں ڈال دیا، پابندی کی ...
سعودی عرب اور خلیجی ممالک نے بڑے اسلامی ملک کو مشکل میں ڈال دیا، پابندی کی دھجیاں اُڑا دیں

  


مناما(مانیٹرنگ ڈیسک) عرب ممالک میں اپنی خواتین ورکرز کے ساتھ ہتک آمیز سلوک کے باعث انڈونیشیاء نے پابندی عائد کر دی ہے کہ آئندہ انڈونیشیاء کی کوئی بھی خاتون عرب ممالک میں روزگار کی غرض سے نہیں جس سکے گی، اور جو پہلے سے وہاں موجود ہیں انہیں بھی واپس بلا لیا جائے گا۔ اس پابندی کا اطلاق آئندہ برس مارچ سے ہونے جا رہا ہے مگر بحرین میں انڈونیشیاء کے اس اقدام کا تمسخر اڑایا جا رہا ہے۔ بحرین میں تعینات انڈونیشیاء کے سفارتی عملے نے اپنی حکومت کو آگاہ کیا ہے کہ بحرینی باشندے اس اقدام کا مذاق اڑا رہے ہیں۔

نیوز ویب سائٹ جی ڈی این آن لائن ڈاٹ کام کی رپورٹ کے مطابق انڈونیشیاء نے مشرق وسطیٰ کے 21ممالک کو بلیک لسٹ کیا ہے جن میں مارچ کے بعد کوئی بھی انڈونیشیئن خاتون کام کے لیے نہیں جا سکے گی اور وہاں موجود خواتین کو بھی واپس بلا لیا جائے گا۔ دوسری طرف بحرین میں موجود انڈونیشیاء کے سفارتی عملے نے یہ بھی اعتراف کیا ہے کہ حکومت کی طرف سے پابندی کا اعلان کیے جانے کے باوجود انڈونیشیاء سے خواتین اب بھی بحرین میں کام کی غرض سے آ رہی ہیں اور ان میں سے زیادہ تر براہ راست انڈونیشیاء کی بجائے کسی تیسرے ملک سے ہو کر آتی ہیں اوران کے پاس بحرین میں گھریلو ملازمہ کے طور پر کام کرنے کا ویزہ موجود ہوتا ہے۔

مزید جانئے: سعودی عرب میں پولیس اہلکاروں کی 2غیر ملکی خواتین کے ساتھ جنسی زیادتی لیکن اصل حقیقت ایسی کہ جان کر ملک میں رہنے والے غیر ملکیوں کی پریشانی کی حد نہ رہے

سفارتی حکام کا کہنا تھا کہ ’’ہمارے لیے خواتین کا اس طرح آنا غیرقانونی ہے اور انہیں واپس ڈی پورٹ کیا جانا چاہیے لیکن بحرین کے قانون کے مطابق وہ جائز طریقے سے آ رہی ہیں۔ انڈونیشیاء کے سفارتی حکام کا کہنا تھا کہ مناما سے جکارتہ تک کئی منظم گروپ موجود ہیں جو ان خواتین کو اب بھی یہاں لا رہے ہیں۔ یہ خواتین پہلے ملائیشیاء، سنگاپور یا کسی دوسرے ملک میں جاتی ہیں اور پھر وہاں سے انہیں بحرین لایا جاتا ہے۔واضح رہے کہ بحرین کے سرکاری اعدادوشمار کے مطابق اس وقت انڈونیشیاء کی 12ہزار 742خواتین بحرین میں بطور گھریلوملازمہ کام کر رہی ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...