تھر کول منصونے سے تھرپارکر پسماندہ سے ترقی یافتہ ضلع بن جائیگا، ڈاکٹر عشرت حسین

تھر کول منصونے سے تھرپارکر پسماندہ سے ترقی یافتہ ضلع بن جائیگا، ڈاکٹر عشرت ...

اسلام آباد(این این آئی)اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے سابق گورنر اور نامور معاشی ماہر ڈاکٹر عشرت حسین نے کہا ہے کہ تھرکول پروجیکٹ سے پاکستان کا پسماندہ ترین علاقہ تھرپارکر سب سے ترقی یافتہ ضلع بن جائے گا۔ حکومت پاکستان، کارپوریٹ سیکٹر کو تھر سمیت ملک کے پسماندہ علاقوں کیلئے سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی کے سماجی ترقی کے ماڈل کو اختیار کرنا چاہیے۔ آکسفورڈ یونیورسٹی پریس کی سربراہ امینا سید نے تھر ہنر شاپ کا افتتاح کیا۔بلاک ٹو کے گاؤں ابن جو تڑمیں تھر فاؤنڈیشن کے پرائمری اسکول کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سابق گورنرا سٹیٹ بنک ڈاکٹر عشرت حسین نے کہاکہ اگر پاکستان کا نجی شعبہ اس ماڈل کو اپنا لے تو پسماندہ علاقوں سے جہالت، بھوک، بد حالی اور غربت ختم ہو جائے گی۔ انہوں نے کہا کے مائیننگ اور پاور پراجکٹس تو بڑی آسانی سے کر لیے جاتے ہیں پر اس علاقے کی ترقی کیلئے جو کام ہو رہا ہے اسے دیکھ کر بڑی خوشی ہوئی ہے۔ تھر کول بلاک ٹو کا دورہ کرنے والے وفد کو سی ای او سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی شمس الدین احمد شیخ نے منصوبے پر تفصیلی بریفنگ بھی دی۔

وفد نے سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی کے اوپن پٹ مائیننگ اوراینگرو پاورجن تھر لمیٹڈ کے 660 میگاواٹ کے پاور پلانٹ، ماڈل ہاؤس سمیت گاؤں ابن جو تڑ میں اسکول کی افتتاحی تقریب میں شرکت بھی کی۔ آکسفورڈ یونیورسٹی پریس کی سربراہ امینا سید نے کہا کہ تھر کی خواتین کے ہینڈی کرافٹس اور ان کے ہنر کی داد دینی چاہیے، اور ان کو پروموٹ کرنا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ تھر کی خواتین کو خود مختار بنانے کیلئے سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی کا خواتین ڈمپر ڈرائیور ز پروگرام کا اجراخوش آئیند ہے۔ سی ای او سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی شمس الدین احمد شیخ نے کہا کہ تھر کی حقیقی ترقی کرنا احسان نہیں بلکہ فرائض میں شامل ہے۔ بچوں کو معیاری تعلیم ، پینے کے صاف پانی کی فراہمی اور جدید طبی سہولیات کی فراہمی ہمارے فرائض منصبی میں شامل ہیں۔ وفد میں آکسفورڈ یونیورسٹی پریس کی سربراہ امینا سید، معروف تجزیہ نگار ڈاکٹر ہمابقائی، صدر میزان بنک عرفان صدیقی، پرویز غیاث سی ای او حبیب یونیورسٹی، سینئر صحافی مرتضی سولنگی، ذوفین ابراہیم، مسعود اختر، سابق سفارتکارعالم بروہی، اعجازنظامانی اور دیگر شامل تھے۔

مزید : کامرس