بھارتی جاسوس کلبھوشن سے والدہ اوربیوی کی ملاقات، چالیس منٹ تک محیط، والدہ نے بیان بدلنے کے لئے کہا

بھارتی جاسوس کلبھوشن سے والدہ اوربیوی کی ملاقات، چالیس منٹ تک محیط، والدہ ...

پاکستان نے جذبہ خیرسگالی کے تحت پاکستان میں گرفتار بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو سے اسکی والدہ اور اہلیہ کی ملاقات کرادی ،ملاقا ت کے موقع پر وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی سکیورٹی انتہائی سخت کی گئی تھی،ریڈزون کو بیریئر لگا کر جزوی طورپرسیل کیاگیا،ڈپلومیٹک انکلیو،ریڈزون میں پولیس بھاری تعداد میں اہلکارتعینات رہی، دفترخارجہ جانیوالے راستے عام ٹریفک کے لیے بند رہے،بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو سے انکی اہلیہ و والدہ کی ملاقات دفتر خارجہ میں کرائی گئی۔ بھارتی جاسوس کی اہلیہ اور والدہ کی آ مد کے مو قع بے نظیر انٹرنیشنل ائیر پورٹ پربھی سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔ ایئر پورٹ کے داخلی و خارجی راستوں پر سخت چیکنگ کی جاتی رہی۔ بھارتی جاسوس کی اہلیہ اور والدہ کو بھارتی سفارت خانہ لے جایا گیا اور کچھ دیر آ رام کے بعد ان کو ملاقات کے لئے دفتر خارجہ لایا گیا۔ جاسوس کلبھوشن کی والدہ، اہلیہ اور بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ ایک بجکر 25 منٹ پر دفتر خارجہ پہنچے اور ایک بجکر 48 منٹ پر ان کی ملاقات شروع ہوئی۔ ترجمان دفتر خارجہ کااس حوالے سے کہنا تھا کہ کلبھوشن سے بیوی اور والدہ کی ملاقات کی اجازت یوم قائداعظم پر انسانیت کے ناتے دی گئی تاہم انہوں نے واضح کیا کہ کلبھوشن سے اہل خانہ کی ملاقات میں بھارتی سفارت خانے کے افسر کی موجودگی قونصلر رسائی نہیں،ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل کاکہناتھا کہ پاکستان نے اپنے وعدہ پور اکر دیا ، بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کو اس کی والدہ اور اہلیہ سے ملاقات کرادی،کلبھوشن یادیو پاکستان میں دہشت گردی اور تخریب کارانہ سر گرمیوں کا اعتراف کرچکا ہے ، بھارت کو کلبھوشن یادیوسے ملاقات کے حوالے سے قونصل رسائی نہیں دی گئی، بھارتی سفارتکار کو کہا تھا کہ آپ ملاقات میں موجود ہوں گے لیکن قونصلر رسائی نہیں دی گئی، بھارتی ہائی کمیشن کو دو ٹوک انداز میں آگاہ کیا گیا تھا کہ سفارتکار موجود ہو گا اور جو صرف ملاقات دیکھ سکے گا، کلبھوشن یادیو سے ملاقات کے دوران بھارتی سفارتکار موجود تھا لیکن ان کو کلبھوشن یادیو سے بات چیت کرنے یا سننے کی اجازت نہیں دی گئی، میڈیکل رپور ٹ کے مطابق کلبھوشن یادیو مکمل طور پر صحت مند ہے، کلبھوشن یادیو کی والدہ اور اہلیہ نے پاکستان کے جذبہ خیرسگالی پر شکریہ ادا کیا،کلبھوشن یادیو کا کیس چل رہا ہے اس وجہ سے قونصلر رسائی کا فیصلہ ابھی نہیں کیا گیا،پاکستان نے بھارتی میڈیا کو ملاقات کی کوریج کیلئے فوری ویزے جاری کرنے کی پیشکش کی تھی لیکن بھارت نے کہاکہ وہ ملاقات کی کوریج کا خواہاں نہیں ہے ، پاکستان کے پاس چھپانے کیلئے کچھ نہیں تھا، کمانڈر یادیو نے درخواست کی کہ ملاقات کا کچھ وقت بڑھادیا جائے جس پر ملاقات کا وقت بڑھایا گیا، ملاقات آخری ملاقات نہیں تھی، ملاقات بڑی مثبت اور اچھی تھی،یہ ملاقات آئی سی جے میں مقدمہ جیتنے کیلئے نہیں کرائی، اسلام امن اور سلامتی اور ہمدردی کا پیغام دیتا ہے، پاکستان کی جانب سے ہم نے ایک مثبت قدم اٹھایا ہے جسکو سراہا جانا چاہیے تھا،بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو نے اپنی والدہ اور اہلیہ سے ملاقات کرانے پر پاکستان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاہے کہ میں نے انسانی ہمدردی کی بنیاد پر اپنی بیگم سے ملاقات کی،میں حکومت پاکستان کا اس بہترین اقدام پر شکرگزارہوں۔

چھ ملکی سپیکرزکانفرنس میں شرکت کیلئے پاکستان آئے اسلامی جمہوریہ ایران کی مشاروتی اسمبلی کے سپیکر ڈاکٹر علی لاریجانی نے پارلیمانی وفدکے ہمراہ اورچینی وائس چیئر مین آف سٹینڈنگ کمیٹی آف نیشنل پیپلز کانگریس(این پی سی)چنگ پنگ نے سپیکرقومی اسمبلی سردار ایاز صادق سے الگ الگ ملاقاتیں کیں جس میں دوطرفہ باہمی تعاون کے امورپرتبادلہ خیال کیا گیا، سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق کاکہنا تھا کہ مسلم ممالک کے درمیان اتحاد وقت کی اہم ضرورت ہے،پاکستان اور ایران کے مابین قریبی تعلقات خطے میں امن، سیکیورٹی اور خوشحالی کے لیے ناگزیر ہیں، دونوں اقوام مشترکہ مذہب ، تاریخ اور ثقافت کے اٹوٹ رشتوں میں بندھی ہوئی ہیں، باہمی مفادات کے لیے دونوں ممالک کے مابین سماجی و اقتصادی شعبوں میں تعاؤن میں اضافہ ضروری ہے،ایرانی سپیکر کا کہنا تھاا کہ ایران پاکستان کو اپنا بھائی سمجھتا ہے اور مختلف شعبوں میں تعاؤن کو فروغ دینے کاخواہاں ہے،انہوں نے سپیکرز کانفرنس کے شاندار انتظامات پر سپیکر قومی اسمبلی کی ذاتی کاوشوں کوسراہا، کانفرنس ممبر ممالک کے مابین رابطوں کوفروغ دینے اور دہشتگردی کے چیلنج کے خاتمے میں اہم کردار ادا کرے گی۔دوسری طرف چینی وائس چیئر مین آف سٹینڈنگ کمیٹی آف نیشنل پیپلز کانگریس(این پی سی)چنگ پنگ کا کہنا تھا کہ صرف پاکستان ہی چین کا سدا بہار شراکت دار ہے، سپیکر کا نفرنس خطے میں پا ئیدار امن اور خو شحالی کے لیے متعلقہ ممالک کے مابین را بطوں کو فر وغ دینے میں اہم کردار ادا کرے گی ، خطے میں امن کے فروغ کے لیے سپیکر قومی اسمبلی کی کاوشیں قابل ستائش ہیں جبکہ سپیکر قومی اسمبلی نے کہا، سی پیک کے تحت تما م منصو بوں کی تکمیل کے لیے پر عزم ہیں ،سی پیک کی تکمیل سے خطے میں ترقی اور خوشحالی کے نئے دور کا آغاز ہوگا، دونوں ممالک کے اراکین پارلیمنٹ اور تجارتی برادری کے مابین مسلسل رابطوں کی ضرورت ہے، دہشتگردی خطے کے امن اور سلا متی کے لیے بڑا خطر ہ ہے اسکے خاتمے کے لیے خطے کے ممالک کو مل کر جدوجہد کرنا ہو گی

دنیا بھرکی طرح راولپنڈی اسلام آباد میں بھی مسیحی برادری نے حضرت عیسی علیہ السلام کے یوم پیدائش کے سلسلے میں کرسمس کی خوشیاں منائیں ، دعائیہ تقریبات میں ملکی ترقی اور خوشحالی کیلئے دعائیں کی گئیں، سانتا کلاز نے لوگوں میں تحائف تقسیم کیے ۔گرجا گھروں، مسیحی افراد کے گھروں اور محلوں میں خصوصی طور پر کرسمس ٹری سجائے گئے تھے ، اس کے علاوہ گھروں اور گزر گاہوں کو برقی قمقموں سے بھی سجایا گیا ۔کرسمس کی تقریبات کا باقاعدہ آغاز اتوار کی رات سے گرجا گھروں میں خصوصی دعائیہ تقریبات سے ہوا۔ ملک میں امن و امان کی صورت حال کے تناظر میں گرجا گھروں اور تفریحی مقامات پر سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات کیے گئے ۔بازاروں میں بھی کرسمس کے حوالے سے خریداروں کا رش دیکھنے میں آیا۔

ملک کی سب سے بڑی (دوسری قائداعظم بین الصوبائی گیمز)کا آغازاسلام آبادسپورٹس کمپلیکس میں رنگارنگ تقریب میں پیر کو ہوگیا، سینٹ میں قائد ایوان راجہ ظفر الحق نے افتتاح کیا۔افتتاحی تقریب میں چاروں صوبوں ،آزاد جموں و کشمیر،گلگت بلتستان کے علاقائی رقص پیش کئے گئے جبکہ ملک کے معروف گلوکاروں نے اس دوران اپنے فن کا مظاہرہ کیا۔ راجہ ظفر الحق کا کہناتھا کہ یوم قائد پر قائداعظم بین الصوبائی گیمز تحفہ ہیں،وہ وقت واپس آرہا ہے ہمارے کھلاڑی ملک کا نام روشن کررہے ہیں،پاکستان میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ،اب دوبارہ وقت واپس آ گیا کہ ہمارے میدان آباد ہیں ،بین الصوبائی گیمز کے ذریعے تمام صوبوں کو ایک جگہ اکھٹا کردیا جس سے صوبوں میں یکجہتی پیدا ہو گی، یہ ایک تاریخی موقع ہے ۔

مزید : ایڈیشن 2