ابصار عالم کی چیئرمین پیمرا تعیناتی کالعدم ہونے کاتحریری فیصلہ جاری

ابصار عالم کی چیئرمین پیمرا تعیناتی کالعدم ہونے کاتحریری فیصلہ جاری

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے سابق چیئرمین پیمرا ابصار عالم کے کم تعلیم یافتہ ہونے کی بنیاد پر تعیناتی کالعدم کرنے کاتحریری فیصلہ جاری کر دیا۔مسٹر جسٹس شاہد کریم کی جانب سے ابصار عالم کو چیئرمین پیمرا کے عہدے سے ہٹانے سے متعلق تحریری فیصلہ جاری کر دیا ہے ، عدالتی فیصلہ 70صفحات پر مشتمل ہے ، عدالت نے منیر احمد کی درخواست پر تفصیلی دلائل سننے کے بعد تحریری فیصلہ جاری کیا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ ابصار عالم کی تعیناتی سے متعلق 11نومبر 2015ء اور 8اپریل 2016ء کا حکومتی نوٹیفیکیشن کالعدم کر دیا گیا ہے ، عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ آئندہ پیمرا کے چیئرمین کی تعیناتی سپریم کورٹ کے فیصلے میں وضع کردہ اصولوں ،شفاف طریقے سے اور میرٹ پر کی جائے، عدالت نے نئے چیئرمین پیمرا کی تعیناتی سے قبل نئے رولز بنانے اور چیئرمین پیمرا کی تعیناتی کے لئے سلیکشن بورڈ کے ارکان کی تعیناتی بھی میرٹ پر کرنے کا حکم دیا ہے ، جسٹس شاہد کریم نے 29نومبر کو منیر احمد کی درخواست پر چیئرمین پیمرا ابصار عالم کو عہدے سے ہٹانے کی درخواست پر دلائل مکمل ہونے پر فیصلہ محفوظ کیا اور عدالت نے 18دسمبر کو چیئرمین پیمرا کو فوری طور پر عہدے سے ہٹانے کا حکم دے دیا تھا ۔

فیصلہ جاری

مزید : علاقائی