مظفرآباد،پولیس ملازمین کو واجبات کی عدم ادائیگی ،ورثاء کااحتجاج

مظفرآباد،پولیس ملازمین کو واجبات کی عدم ادائیگی ،ورثاء کااحتجاج

مظفرآباد(بیورورپورٹ)پولیس ملازمین کو واجبات کی عدم ادائیگی ،ورثاء میدان میں کود پڑے ۔31دسمبر 2017تک حکومت کو ڈیڈلائن دیدی ۔ملازمین کو مستقل تنخواہوں کی ادائیگی یقینی بنائی جائے ۔بصورت دیگر ریاست گیر احتجاجی تحریک شروع کرینگے ۔حکومت نے باقاعدہ ہدایات جاری کی ہوئی ہیں ۔انسپکٹر جنرل پولیس روڑے اٹکا رہے ہیں ہیں ۔ان خیالات کا اظہار متاثرہ پولیس ملازمین کے ورثاء علی محمد بٹ،صابر مغل ،محمد جمیل اعوان ،نزاکت حسین کاظمی ،نعیم اعوان اوردیگر نے مظفرآباد پریس کلب میں پرہجوم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔انہوں نے 194پولیس ملازمین گزشتہ چھ ماہ سے تنخواہوں سے محروم ہیں ۔لیکن ان ملازمین سے باقاعدہ ڈیوٹی لی جا رہی ہے ۔یہ ملازمین شدید معاشی بحران سے دو چار ہیں ۔ان کے بچوں کو فیسوں کی عدم ادائیگی پر سکولز،کالجز ،یونیورسٹی سے نکالا گیا ہے ۔دکانداروں نے ادھار دینا بھی بند کر دیا ہے ۔بجلی کے کنکشن تک کاٹ دئیے گئے ہیں ۔بیمار والدین اور بال بچوں کو ادویات تک میسر نہ ہے ۔بوڑھے والدین پیراسیٹامول کی گولی کو ترس گئے ہیں ۔علاج معالجہ نہ ہونے سے ان کی زندگیاں داؤ پر لگی ہوئی ہیں ۔وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر خان نے زیر نوٹی فکیشن 10665-71مورخہ 11ستمبر 2017میں فوری طور پر مستقل کرنے کا حکم جاری کیا ہوا ہے ۔انسپکٹر جنرل پولیس شعیب دستگیر نے وزیر اظم کے حکم کو چیلنج کر رکھا ہے جو کہ حکم عدولی کے مترادف ہے ۔انہوں نے کہا کہ پولیس ملازمین کا معاشی قتل کیا جا رہا ہے ۔ان کے خاندانوں کی زندگیاں داؤ پر لگی ہوئی ہیں ۔ہم اپنا حق چھین کر لیں گے ۔روزگار کی فراہمی حکومت کا فرض ہے ۔یہ ریاستی باشندے کا حق ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم اپنے جائز حق کیلئے ہر قربانی دینگے ۔اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرینگے ۔31دسمبر 2017تک تنخواہیں ادا نہ ہوئی تو ریاست گیر احتجاج کرینگے ۔اگر ناخوشگوار واقعہ رونما ہوا تو اس کی تمام تر ذمہ داری انسپکٹر جنرل پولیس اور ڈپٹی انسپکٹر جنرل پولیس پر عائد ہوگی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر