”بھارتی حکام نے مجھے بتایا تھا کہ وہ بلوچستان میں۔۔۔ “معروف ترین بین الاقوامی صحافی کرسٹینا فیئر نے بھارت کا پول کھول دیا

”بھارتی حکام نے مجھے بتایا تھا کہ وہ بلوچستان میں۔۔۔ “معروف ترین بین ...
”بھارتی حکام نے مجھے بتایا تھا کہ وہ بلوچستان میں۔۔۔ “معروف ترین بین الاقوامی صحافی کرسٹینا فیئر نے بھارت کا پول کھول دیا

  

واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان بالخصوص بلوچستان میں دہشتگردی کرانیوالے بھارتی جاسوس اور سزائے موت کے مجرم کلبھوشن یادیو کی اہلخانہ سے ملاقات کے بعد ایک مرتبہ پھر بھارتی میڈیا نے پاکستان کیخلاف زہراگلناشروع کردیا اور ہرممکن ہرحدتک کلبھوشن یادیو کو ”معصوم“ قراردینے کی کاوش میں ہے تاہم اب معروف عالمی صحافی اور واشنگٹن کی ایک یونیورسٹی کی سیکیورٹی سٹڈیز پروگرام کی ایسوسی ایٹ پروفیسر کرسٹینا فیئر نے بھارت کا پول کھول دیا اور سچ دنیا کے سامنے لے آئیں جس پر بھاریتوں کو بھی شدید مرچیں لگ گئیں ۔

اپنے ایک ٹوئیٹ میں کرسٹینا فیئرنے لکھاکہ ” ایک دفعہ بھارتی حکام نے مجھے بتایاکہ وہ بلوچستان میں رقم بھیج رہے ہیں تاہم اس کا مفہوم واضح نہیں تھا، یہ بات مصر کے شہر شرم الشیخ میں ہوئی تھی ، بھارت اتنا معصوم نہیں جتنا دعویٰ کرتاہے اور نہ ہی اتنا ذمہ دار ہے جتنا پاکستان ٹھہراتا ہے “۔

کرسٹینا کی یہ ٹوئیٹ سامنے آتے ہی بھارتیوں کو بھی شدید مرچیں لگ گئیں اور اپورو شکلا نے لکھاکہ” تاہم جب حامد میرنے کہاتو آپ نے خود اسے زیدان کے ذریعے بلوچستان میں مداخلت کا بتایا، وہ ایک سفید جھوٹ تھا نا ؟؟؟اس پر احتجاج ہونا چاہیے ، ذاتی تبادلہ خیال کا کوئی ثبوت نہیں تھا اور پھر انہوں نے اپنے مفاد میں اسے استعمال کیا۔

مزید : بین الاقوامی