بسنت کا اعلان ،وزیر اطلاعات ،چیف سیکرٹری آئی جی پنجاب کو توہین عدالت کی درخواست پر نوٹس

بسنت کا اعلان ،وزیر اطلاعات ،چیف سیکرٹری آئی جی پنجاب کو توہین عدالت کی ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ میں بسنت منانے کا اعلان کے خلاف دائردرخواست پر پنجاب حکومت کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ بسنت منانے کا فیصلہ نہیں ہوا ،بسنت منانا ابھی صرف تجاویز کے مرحلے میں ہیں،دریں اثناء عدالت نے بسنت کی اجازت دینے پرصوبائی وزیراطلاعات فیاض الحسن چوہان، چیف سیکرٹری، آئی جی پنجاب ودیگر کے خلاف توہین عدالت کی درخواست پر نوٹس بھی جاری کر دئیے ہیں۔درخواست گزار کاموقف ہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود صوبائی وزیر فیاض الحسن چوہان نے بسنت منانے کا اعلان کیا ، چیف سیکرٹری پنجاب اور آئی جی پنجاب نے پتنگ بازی روکنے کے لئے اقدامات نہیں کئے، پتنگ بازی سے معصوم بچوں کے ہلاک اور زخمی ہونے کے واقعات سامنے آئے ہیں، عدالت کے حکم پر عمل درآمد نہ کرنا توہین عدالت ہے، صوبائی وزیر، چیف سیکرٹری، آئی جی پنجاب ودیگر ذمہ داران کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی عمل میں لائی جائے،پتنگ بازی سے ہونے والی ہلاکتوں اور نقصانات کا مقدمہ چیف سیکرٹری، آ ئی جی پنجاب ودیگر کے خلاف درج کرنے کا حکم بھی دیا جائے، بسنت خونی کھیل کی شکل اختیار کر گیا تھا اور اسی وجہ سے اس پر پابندی لگائی گئی تھی، کوئی بھی ایسی تفریح جو انسانی جانوں کے ضیاع کی وجہ بنے،اس کی اجازت دینا خلاف آئین کے منافی ہے، حکومت عوامی مسائل سے توجہ ہٹانے کیلئے بسنت جیسے خونی کھیل کی اجازت دے رہی ہے، ماضی میں بسنت کے موقع پر ڈور پھرنے کے واقعات سے قیمتی جانیں ضائع ہوئیں اور اربوں روپے کا املاک کا نقصان ہوا،حکومت کا بسنت کی اجازت دینے کا اقدام کالعدم قرار دے کربسنت پر پابندی برقرار رکھی جائے۔یہ درخواستیں ایک این جی او ہیلمز فاؤنڈیشن نے دائر کررکھی ہیں ،عدالت نے آئندہ سماعت پر وکلاء کو بحث کیلئے بھی طلب کرلیاہے۔

مزید :

علاقائی -