عوام کا معیاری زندگی بلند کرنا اولین ترجیح ہے‘ کمشنر ڈیرہ

عوام کا معیاری زندگی بلند کرنا اولین ترجیح ہے‘ کمشنر ڈیرہ

  

پشاور (سٹاف رپورٹر)کمشنر ڈیرہ جاوید خان مروت نے کہا ہے کہ حکومت لوگوں کی فلاح و بہبود اور ان کا معیار زندگی بلند کرنے کیلئے سرکاری محکموں کے تعاون سے تمام وسائل بروئے کار لا رہی ہے۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار آج اپنے دفتر میں ڈسٹرکٹ پرفارمنس مانیٹرنگ فریم ورک کے تحت ضلعی محکموں کی کارکردگی کا جائزہ لینے سے متعلق منعقدہ اجلاس سے کیا۔اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ڈیرہ، ٹانک، اسسٹنٹ کمشنرز کے علاوہ محکمہ صحت، تعلیم ، زراعت، آبپاشی، تحفظ اراضیات، بہبود آبادی، سی اینڈ ڈبلیو، پبلک ہیلتھ، بلدیات، فشریز، سپورٹس، ٹی ایم اوز اور سوشل ویلفیئر کے افسران و نمائندوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔کمشنر ڈیرہ جاوید خان مروت نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت ترقیاتی سکیموں اور دیگر سہولیات کے ذریعے سرکاری محکموں کے تعاون سے لوگوں کو زندگی کی ضروریات فراہم کرنے کیلئے پرعزم ہے۔ تمام محکمے اپنی ذمہ داریاں احسن طور پر سرانجام دیتے ہوئے عوامی مفاد سے متعلق ترقیاتی کاموں کی رفتار اور معیار کو بہتر بنائیں اور انہیں ریلیف فراہم کرنے کیلئے بروقت اور فوری اقدامات اٹھائیں۔ انہوں نے کہا کہ سرکاری ادارے ترقیاتی کاموں کے سلسلے میں اپنی رینکنگ بہتر بنائیں۔ انہوں نے محکمہ زراعت ، لائیو سٹاک، پبلک ہیلتھ کی رینکنگ پورے صوبے میں دوسرے نمبر پر جبکہ واٹر منیجمنٹ کی رینکنگ تیسرے نمبر پر آنے پر ان کی کارکردگی کو سراہا ۔ اسی طرح جن محکموں کی کارکردگی بہتر نہ رہی ان کی سرزنش کی اور کارکردگی بہتر بنانے کی ہدایت کی۔ اسی طرح انہوں نے ٹی ایم اوز کو ہدایت کی کہ سرکلر روڈز اور دیگر جگہوں پر ناجائز تجاوزات کیخلاف فوری کاروائی کریں۔انہوں نے تمام اسسٹنٹ کمشنر ز کو ہدایت کی کہ شادی ہالز میں ساؤنڈ سسٹم بیمار اور بوڑھے لوگوں کیلئے تکلیف کا باعث بنتا ہے تاہم اس کیلئے فوری اقدامات کیے جائیں اور ذمہ داروں کیخلاف سخت ایکشن لیا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تمام اسسٹنٹ کمشنرز لوگوں کو صحت کی سہولیات فراہم کرنے ، پرائس چیکنگ،ترقیاتی منصوبوں کے معیار کو چیک کرنے کیلئے سرپرائز وزٹ کریں تاکہ محکموں کی کارکردگی سے متعلق معلومات حاصل کی جا سکیں۔ انہوں نے تمام محکموں کو سختی سے ہدایت کی کہ ترقیاتی کاموں کے سلسلے میں رینکنگ بہتر نہ بنانے والوں کے خلاف تادیبی کاروائی عمل میں لائی جائیگی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -