ڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں "جشنِ جناح "کا انعقادڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں "جشنِ جناح "کا انعقاد

ڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز میں "جشنِ جناح "کا انعقادڈاؤ یونیورسٹی آف ...

  

کراچی (پ ر)ہائر ایجوکیشن کمیشن پاکستان کے ریجنل ڈائریکٹر سندھ جاویدمیمن نے کہا ہے کہ قائدِ اعظم محمد علی جناح نے جو پاکستان ہمیں دیا ہم اسکی حفاظت نہیں کر سکے، مگر جو بھی پاکستان ہمارے پاس ہے، اس پاکستان کو قائد کے اصولوں کے مطابق چلاناہوگا، یہ بات انہوں نے ڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے آراگ آڈیٹوریم میں" جشنِ جناح "کے سلسلے میں تقریری مقابلے میں بحیثیت مہمانِ خصوصی خطاب کرتے ہوئے کہی۔اس موقع پر ان کے علاوہ پروگرام آرگنائزر پروفیسر مکرم علی ، مقابلے کے منصیفین نعیم طاہر، محمد اطیب اور طلبا و طالبات نے خطاب کیا۔جاوید میمن نے کہا کہ نوجوان ہی پاکستان کی امید ہیں، جب نئے عزم کے ساتھ اٹھیں گے تو اسے قائدِ اعظم محمد علی جناح کے ویژن کے مطابق آگے لے جائیں گے۔دنیا کے ممالک کی صف میں سب سے آگے ہوگا، دیگر مقررین نے خطاب میں کہا کہ قائدِ اعظم محمد علی جناح کو قیامِ پاکستان کے بعد زندگی نے مہلت نہ دی مگراس کے باوجود انہوں نے اس نوزائیدہ مملکت کو مختلف شعبوں میں مستحکم کر دیا، بہت ہی قلیل مدت میں اسٹیٹ بینک آف پاکستان کا قیام عمل میں آیا،اور دستور ساز اسمبلی نے بھی اہم امور انجام دئیے۔ان مقررین نے کہا کہ قائدِ اعظم کے سپاہی ہر دور میں قربانیاں دے کر قائدِ اعظم کے پاکستان کو اپنے خون سے سیر اب کرتے رہے ہیں، کیپٹن سرور سے حوالدار لالک جان تک کشمیر کے پہلے شہید اور آرمی پبلک اسکول پشاور کی پرنسپل طاہرہ قاضی اور جواں عمر اعتزاز حسن تک سب نے اس ملک کی خاطر اپنا خون دیا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان قائم رہنے کے لیے بنا ہے اور رہتی دنیا تک رہے گا۔ اس کے بیٹے اور جاں باز اسے سنبھال کر رکھیں گے۔بعد ازاں تقریری مقابلے کے انعام یافتگان ڈاؤ میڈیکل کا لج کی طالبہ مس مریم بتول ، شہید محترمہ بے نظیر بھٹو میڈیکل کالج کی مس طیبہ اور انسٹیٹیوٹ آف فیزیکل میڈیسن اینڈ ری ہیبلیٹیشن کی طالبہ مس انوشہ نسیم نے بالترتیب پہلی ، دوسری اورتیسری پوزیشن حاصل کی۔جبکہ مقابلہ مضمون نویسی کے مقابلے میں پہلی پوزیشن ڈی ایم سی کی مس مریم بتول ، مس حرا اقبال نے دوسری جبکہ نورالعلماء حسن نے تیسری پوزیشن حاصل کی۔قبل ازیں طلبا نے قائدِ اعظم کے فرمودات اور آج کے پاکستان کے عنوان سے خاکے بھی پیش کیے۔

کراچی (پ ر)ہائر ایجوکیشن کمیشن پاکستان کے ریجنل ڈائریکٹر سندھ جاویدمیمن نے کہا ہے کہ قائدِ اعظم محمد علی جناح نے جو پاکستان ہمیں دیا ہم اسکی حفاظت نہیں کر سکے، مگر جو بھی پاکستان ہمارے پاس ہے، اس پاکستان کو قائد کے اصولوں کے مطابق چلاناہوگا، یہ بات انہوں نے ڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز کے آراگ آڈیٹوریم میں" جشنِ جناح "کے سلسلے میں تقریری مقابلے میں بحیثیت مہمانِ خصوصی خطاب کرتے ہوئے کہی۔اس موقع پر ان کے علاوہ پروگرام آرگنائزر پروفیسر مکرم علی ، مقابلے کے منصیفین نعیم طاہر، محمد اطیب اور طلبا و طالبات نے خطاب کیا۔جاوید میمن نے کہا کہ نوجوان ہی پاکستان کی امید ہیں، جب نئے عزم کے ساتھ اٹھیں گے تو اسے قائدِ اعظم محمد علی جناح کے ویژن کے مطابق آگے لے جائیں گے۔دنیا کے ممالک کی صف میں سب سے آگے ہوگا، دیگر مقررین نے خطاب میں کہا کہ قائدِ اعظم محمد علی جناح کو قیامِ پاکستان کے بعد زندگی نے مہلت نہ دی مگراس کے باوجود انہوں نے اس نوزائیدہ مملکت کو مختلف شعبوں میں مستحکم کر دیا، بہت ہی قلیل مدت میں اسٹیٹ بینک آف پاکستان کا قیام عمل میں آیا،اور دستور ساز اسمبلی نے بھی اہم امور انجام دئیے۔ان مقررین نے کہا کہ قائدِ اعظم کے سپاہی ہر دور میں قربانیاں دے کر قائدِ اعظم کے پاکستان کو اپنے خون سے سیر اب کرتے رہے ہیں، کیپٹن سرور سے حوالدار لالک جان تک کشمیر کے پہلے شہید اور آرمی پبلک اسکول پشاور کی پرنسپل طاہرہ قاضی اور جواں عمر اعتزاز حسن تک سب نے اس ملک کی خاطر اپنا خون دیا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان قائم رہنے کے لیے بنا ہے اور رہتی دنیا تک رہے گا۔ اس کے بیٹے اور جاں باز اسے سنبھال کر رکھیں گے۔بعد ازاں تقریری مقابلے کے انعام یافتگان ڈاؤ میڈیکل کا لج کی طالبہ مس مریم بتول ، شہید محترمہ بے نظیر بھٹو میڈیکل کالج کی مس طیبہ اور انسٹیٹیوٹ آف فیزیکل میڈیسن اینڈ ری ہیبلیٹیشن کی طالبہ مس انوشہ نسیم نے بالترتیب پہلی ، دوسری اورتیسری پوزیشن حاصل کی۔جبکہ مقابلہ مضمون نویسی کے مقابلے میں پہلی پوزیشن ڈی ایم سی کی مس مریم بتول ، مس حرا اقبال نے دوسری جبکہ نورالعلماء حسن نے تیسری پوزیشن حاصل کی۔قبل ازیں طلبا نے قائدِ اعظم کے فرمودات اور آج کے پاکستان کے عنوان سے خاکے بھی پیش کیے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -